برطانیہ میں دو مسلمان پاکستانی ہم جنس پرست لڑکیوں کی شادی

دونوں اعلی تعلیم یافتہ اور بر سر روزگار ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

برطانیہ میں دو مسلمان پاکستانی نژاد ہم جنس لڑکیوں نے آپس میں شادی کرلی۔ رجسٹریشن کے بعد دونوں قانونی طور پر جیون ساتھی بن گئیں۔

لندن سے شائع ہونے والے اخبار 'ڈیلی میل' کے مطابق ریحانہ کوثر اور ثوبیہ کومل ابتدائی طور پر جب کونسل آفس پہنچیں تو کونسل نے یہ کہہ کر معذرت کر لی کہ وہ دونوں مسلمان ہیں لہذا شادی رجسٹر نہیں ہوسکتی۔ ریحانہ کوثر اور ثوبیہ قمر نے موقف اختیار کیا کہ وہ بالغ ہیں اور برطانوی قوانین کے مطابق اپنی زندگی گزارنے کیلئے آزاد ہیں۔

کونسل نے ان کا موقف سننے کے بعد انہیں رجسٹریشن کیلئے ایک ماہ کا وقت دیا جو پورا ہوگیا۔ جس کے بعد دونوں لڑکیاں دلہن کے سفید لباس میں رجسٹریشن آفس پہنچیں اور شادی کے رجسٹر پر دستخط کر کے 'رشتہ ازدواج' میں منسلک ہو گئیں۔

یادر رہے کہ ریحانہ کا تعلق پاکستان کے شہر لاہور سے جبکہ ثوبیہ کا تعلق میرپور [آزاد کشمیر] سے بتایا جاتا ہے۔ دونوں بر سر روزگار ہیں۔ ریحانہ نے پنجاب یونیورسٹی سے پی ایچ ڈی کی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں