.

عمرو موسی کی اخوان کے نائب مرشد عام سے 'خفیہ' ملاقات

حکومت مخالف محاذ کی صفوں میں انتشار پیدا ہونے لگا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصری اپوزیشن اتحاد 'نیشنل سالویشن فرنٹ' کے سرکردہ رہنما اور حزب المٶتمر کے سربراہ عمرو موسی کی جماعت کو اتحاد سے نکالنے پر غور کر رہی ہے۔ اس اقدام کی وجہ عمرو موسی کی حکمران جماعت 'اخوان المسلمون' کے نائب مرشد عام خیرت الشاطر سے 'غد الثورة' پارٹی کے سربراہ ایمن نور کے گھر ملاقات بتائی جاتی ہے۔

نیشنل سالویشن فرنٹ کے رہنما حمدین صباحی نے مصری اخبار 'الیوم السابع' سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ عمرو موسی کی خیرت الشاطر سے ملاقات کے بعد مصر میں ایک نیا بحران پیدا ہونے والا ہے، جو کسی بھی لمحہ پھٹ سکتا ہے۔

اخبار کے مطابق دونوں رہنماٶں کے درمیان ملاقات ایمن نور کے گھر فرنٹ کی رکن جماعتوں سے بغیر مشاورت ہوئی۔ بعض رکن جماعتوں کے بہ قول یہ حکومت مخالف اتحاد توڑنے کی ایک کوشش ہے جبکہ بعض کے خیال میں عمرو موسی 'اخوان' کے شرک کا شکار ہوئے۔

نیشنل سالویشن فرنٹ نے حکومت مخالف محاذ کے رہنما حمدین صباحی کے حوالے سے جاری بیان کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ عمرو موسی کو اخوانی رہنما سے ملاقات کی پاداش میں فرنٹ سے نکالنے کا امکان ان کی ذاتی رائے ہو سکتی ہے، اسے فرنٹ کی رائے پر محمول کرنا مناسب نہیں ہے۔

حمدین صباحی کے بہ قول عمرو موسی سے محاذ کے اگلے ہفتے ہونے والے اجلاس میں باز پرس کی جائے گی اور ان کا موقف سننے کے بعد ہی کوئی فیصلہ کیا جائے گا۔

ادھر عمرو موسی بھی اخوانی قیادت سے اپنی ملاقات منکشف ہونے پر انتہائی پریشان ہیں۔ ایک بیان میں مصر کے منجھے ہوئے سابق سفارتکار کا کہنا تھا کہ اخوان کے نائب مرشد عام سے ملاقات میں انہوں نے ملک کی اندرونی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا جو ان کے بہ قول بد انتظامی اور بڑھتے ہوئے عوامی احتجاج کی وجہ سے روز بروز بگڑتی جا رہی ہے۔