.

فرانس، امریکا میں شام میں کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال سے متعلق اختلافات

29 اپریل کو حمص اور جوبر میں سیرن گیس کے استعمال کا یقین ہے: فرانسیسی سفارت کار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فرانس اور امریکا کے درمیان شام میں کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کے حوالے سے اختلافات پیدا ہوگئے ہیں۔فرانس کیمیائی ہتھیاروں سے متعلق اپنے تجزیے کے درست ہونے پر اصرار کررہا ہے جبکہ امریکا کا کہنا ہے کہ اس کو اس ضمن میں مزید شواہد کی ضرورت ہے۔

ایک فرانسیسی سفارت کار نے جمعرات کو العربیہ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ''یہ درست ہے ہمارے پاس امریکا کی طرح کے کیمیائی ہتھیاروں کی تصدیق کے ذرائع نہیں ہیں اور وہ نمونوں کی مختلف مراحل میں منتقلی میں درپیش فنی مشکلات کی جو بات کررہے ہیں،وہ بھی درست ہے''۔

اس سفارت کار کا کہنا ہے کہ ''ہمیں 29 اپریل کو شام کے وسطی شہر حمص اور جوبر میں سیرن گیس کے استعمال کے بارے میں یقین ہے لیکن جوبر میں اس کے استعمال کا عمل بہت پیچیدہ ہوگیا ہے کیونکہ وہاں سے آنے والے خون کے نمونے مکمل حالت میں نہیں تھے''۔

ان کا کہنا تھا کہ ''امریکا کی اس وقت ترجیح یہ ہے کہ وہ جنیوا میں مجوزہ کانفرنس کو کامیاب بنانا چاہتا ہے لیکن اس کے ساتھ ساتھ ہماری یہ ذمے داری ہے کہ ہم کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال سے متعلق سچائی کو منظرعام پر لائیں''۔

اس سفارت کار کے بہ قول:''اوباما انتظامیہ کسی فوجی مہم جوئی سے بچنا چاہتی ہے کیونکہ اسے یہ خدشہ لاحق ہے کہ اگر اس کا آغاز ہوتا ہے تو اس کو روکنا مشکل ہوجائے گا لیکن میں یہ کہنا چاہتا ہوں کہ واشنگٹن اس معاملے میں بالکل تنہا ہے''۔

فرانسیسی وزیرخارجہ لوراں فابیئس نے منگل کو ایک بیان میں شام سے آنے والے کیمیائی نمونوں کے ٹیسٹوں کے بعد وہاں زہریلی گیس سیرن کے استعمال کی تصدیق کی تھی۔انھوں نے ''فرانس 2'' ٹیلی ویژن چینل سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ شام میں کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال سے متعلق ٹیسٹوں کے نتائج سے اقوام متحدہ کو آگاہ کردیا گیا ہے۔

ان کے بہ قول ''کم سے کم ایک کیس میں اس امر کی شہادت ملی ہے کہ شامی رجیم اور اس کے حامیوں نے اعصاب شکن کیمیائی گیس استعمال کی ہے۔ہم اپنے شراکت داروں کے ساتھ مل کر ممکنہ اقدام کے بارے میں بات چیت کریں گے اور اس وقت مسلح کارروائی سمیت تمام آپشنز زیرغور ہیں''۔فرانسیسی وزیرخارجہ کے اس بیان کے بعد برطانیہ نے بھی شام میں سیرن گیس کے استعمال کی تصدیق کی ہے۔

تاہم امریکا نے اس معاملے میں محتاط طرزعمل اختیار کررکھا ہے لیکن وائٹ ہاؤس کا کہنا ہے کہ شام سے متعلق کوئی فیصلہ کرنے سے پہلے اسے مزید شواہد کی ضرورت ہے۔امریکی وزیرخارجہ جان کیری نے اپنے فرانسیسی ہم منصب لوراں فابیئس سے کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال سے متعلق شواہد کے تبادلے کے لیے کہا ہے۔