.

ایران کے صدارتی انتخاب میں حسن روحانی کی 50 % ووٹوں سے برتری

ابتک ہونے والے ووٹوں کی گنتی کے مطابق قالیباف دوسری نمبر پر ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایرانی وزارت داخلہ کے مطابق گزشتہ روز ہونے والے صدارتی انتخاب میں ووٹوں کی گنتی کا عمل جاری ہے اور ابتک 6.5 ملین ووٹوں کی گنتی میں صدارتی امیدوار حسن روحانی کو 50.4 فیصد ووٹوں کے ساتھ برتری حاصل ہے۔

انتخابی قوانین کے مطابق صدارتی انتخاب میں کامیابی کے لیے جیتنے والے امیدوار کو 50 فیصد سے زائد ووٹ حاصل کرنا ضروری ہیں۔ اگر کوئی بھی امیدوار اتنے ووٹ حاصل کرنے میں ناکام رہا تو ایک ہفتے بعد اُن دو امیدواروں کے درمیان دوبارہ پولنگ ہوگی جنہوں نے پہلے مرحلے میں سب سے زیادہ ووٹ حاصل کیے ہوں گے۔

ابتدائی نتائج کے مطابق حسن روحانی کے بعد ان کے قریب ترین مد مقابل محمد باقر قالیباف نے 17.14 فیصد جبکہ تیسرے نمبر پر سعید جلیلی 13.59، چوتھے نمبر پر محسن رضائی 11.9، علی اکبر ولایتی 6.46 اور محمد غرضی 1.28 فیصد ووٹ لیکر چھٹے نمبر پر ہیں۔

ووٹوں کی گنتی کا عمل جاری ہے، صدارتی انتخاب لڑنے والے امیدواروں نے اپنے اپنے حامیوں سے اپیل کی ہے کہ وہ پرامن طور پر نتائج کے سرکاری اعلان کا انتظار کریں۔

یاد رہے کہ جمعہ کے روز ہونے والے صدارتی انتخاب کے موقع پر ملک بھر میں مختلف پولنگ اسٹیشنز پر ووٹروں کے بھاری ٹرن آؤٹ کی وجہ سے ووٹنگ کے وقت میں اضافہ کرنا پڑا تھا۔

صدارتی انتخابات میں حصہ لینے کے لیے ابتدائی طور پر 638 امیدواروں نے دلچسپی ظاہر کی تھی لیکن ملک کے اعلیٰ ترین فیصلہ ساز ادارے 'شوریٰ نگہبان' نے آٹھ اُمیدواروں کو انتخاب لڑنے کا اہل قرار دیا تھا۔ انتخابی مہم کے آخری ہفتے کے دوران بھی دو امیدوار انتخابات سے دستبردار ہو گئے تھے۔