.

امیرِ قطرکا اپنے بیٹے تمیم کو اقتدار منتقل کرنے کا فیصلہ

نئے امیر قطر کے اقتدار سنبھالنے کے بعد کابینہ میں ردوبدل کا امکان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امیر قطر شیخ حمد بن خلیفہ آل ثانی نے حکمران خاندان کے ساتھ مشاورت کے بعد اقتدار اپنے بیٹے شیخ تمیم کو منتقل کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور وہ منگل کو ایک نشری تقریر میں اس کا باضابطہ اعلان کریں گے۔

قطر کے ملکیتی الجزیرہ ٹی وی چینل کی رپورٹ کے مطابق باسٹھ سالہ شیخ حمد نے ''مسائل حل کرنے والے لوگوں'' سے ملاقات کی ہے اور اس کے بعد قیادت اپنے بیٹے تمیم کو سونپنے کا فیصلہ کیا ہے''۔شیخ حمد منگل کو قوم سے خطاب کریں گے اور اس میں وہ اپنے اس فیصلے کا اعلان کریں گے۔

سفارتی ذرائع نے قبل ازیں اطلاع دی تھی کہ قطر میں اقتدار کی منتقلی پر غور کیا جارہا ہے اور امیر قطر اقتدار اپنے ولی عہد بیٹے کو سپرد کرکے سبکدوش ہوجائیں گے اور وہ صرف علامتی حکمران ہی رہیں گے جبکہ خلیجی ریاست کا تمام نظم ونسق نئے امیر قطر چلائیں گے۔

فرانسیسی خبررساں ادارے اے ایف پی نے اپنے ذرائع کے حوالے سے اطلاع دی ہے کہ نئے امیر قطر کے اقتدار سنبھالنے کے بعد کابینہ میں ردوبدل بھی کیا جائے گا اور طاقتور وزیراعظم شیخ حمد بن جاسم آل ثانی اپنے عہدے سے محروم ہوسکتے ہیں یا پھر ان سے وزارت خارجہ کا قلمدان واپس لیا جاسکتا ہے۔

ان ذرائع کے مطابق امیر قطر کا خیال ہے کہ اب ذمے داریاں نئی نسل کے سیاست دانوں اور حکمرانوں کو سونپی جانی چاہئیں اورتوقع ہے کہ کابینہ میں ردوبدل کے وقت نوجوان وزراء کو ملک کا نظم ونسق چلانے کی ذمے داری سونپی جائے گی۔قطر کے متوقع نئے حکمران شیخ تمیم 1980ء میں پیدا ہوئے تھے اور وہ امیر قطر کے ان کی دوسری بیوی شیخہ موزہ سے دوسرے بیٹے ہیں۔