.

روسی نونہال کی زہریلے آبی سانپ سے اٹھکیلیاں

پانی والے سانپ کا ڈنگ انتہائی مہلک ہوتا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سماجی رابطے کی ویب سائٹ 'یو ٹیوب' پر حال ہی میں ایک ویڈیو بہت زیادہ مقبول ہو رہی ہے جس میں اٹھارہ ماہ کا ایک روسی نونہال سانپ کو بے خطر ہاتھوں میں لئے اس کے ساتھ پانی میں اٹھکیلیاں کر رہا ہے۔

ایک طرف نامعلوم ننھا بچہ بے خطر پانی میں ایک زہریلے سانپ سے کھیل رہا ہے دوسری جانب پس منظرمیں معصوم بچے کی 'خطرناک حرکت' دیکھ کر اس کے والدین بلند آواز میں قہقہے لگا رہے ہیں۔ انہیں اس بات کا ذرا احساس نہیں ہے کہ پانی کا زہریلہ ناگ ان کے بچے کو ڈس سکتا ہے، جس سے اس کی موت بھی واقع ہو سکتی ہے۔

پانی والے سانپ کے جسم پر سیاہ دھبے ہوتے ہیں۔ مینڈک، پرندے اور دیگر حشرات اس کی من بھاتی غذا ہیں۔ یہ سانپ گرمیوں میں انڈے سیتا ہے جن سے اس کی نسل کی افزائش ہوتی ہے۔ سانپ کی لمبائی ایک سو پانچ سینٹی میٹر ہوتی ہے جو بعض حالات میں ڈیڑھ میٹر تک جا پہنچتی ہے اور ویڈیو میں دکھائی دینے والا سانپ اسی سائز کا ہے۔

عمومی طور پر پانی کا سانپ بہت زیادہ زہریلہ ہوتا ہے۔ یہ دریاوں کے پاس جمع شدہ پانی میں پایا جاتا ہے، اسے بعض سمندری علاقے میں بھی دیکھا جا سکتا ہے۔ پانی کا سانپ انتہائی زہریلہ ہوتا ہے اور بالغ شخص کو بھی اگر یہ ڈس لے تو اس موت واقع ہو سکتی ہے۔