حمص میں خونریزی رکوانے کے لیے سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس بلانے کا مطالبہ

شام کے وسطی شہر میں باغیوں کے ٹھکانوں پر اسدی فوج کے حملے جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

خلیج تعاون کونسل (جی سی سی) نے شام کے وسطی شہر حمص میں شہریوں کا قتل عام رکوانے کے لیے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا فوری اجلاس بلانے کا مطالبہ کیا ہے۔

جی سی سی نے سوموار کو جاری کردہ ایک بیان میں کہا ہے کہ ''شامی حکومت نے حمص کے نواح میں نسلی اور فرقہ وارانہ تطہیر جاری رکھی ہوئی ہے اوراس کی جانب سے اپنے ہی عوام کے خلاف کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کے پیش نظرحمص کا محاصرہ غیر انسانی ہے''۔

جی سی سی نے بیان میں کہا ہے کہ وہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا فوری اجلاس بلانے کا مطالبہ کرتی ہے تاکہ حمص کا محاصرہ ختم کرایا جاسکے۔کونسل میں شامل چھے عرب ممالک اومان ،قطر، متحدہ عرب امارات ،سعودی عرب ،کویت اور بحرین نے شام میں صدر بشارالاسد کی حمایت میں شیعہ ملیشیا حزب اللہ کی موجودگی پر تشویش کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ وہ ایران کی پاسداران انقلاب کور کے بینر تلے شامی باغیوں کے خلاف لڑائی میں شریک ہے۔

جی سی سی کے وزرائے خارجہ نے اتوار کو یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کی سربراہ کیتھرین آشٹن سے ملاقات کی تھی اور اس موقع پر یورپی ممالک پر زوردیا تھا کہ وہ باغی جنگجوؤں کو جلد سے جلد مسلح کریں۔

شامی صدر بشارالاسد کی وفادار فوج نے وسطی شہر حمص میں باغی جنگجوؤں کے ٹھکانوں پر ہفتے کے روز سے زمینی اور فضائی حملے جاری رکھے ہوئے ہیں لیکن وہ کوئی نمایاں پیش قدمی نہیں کرسکی ہے۔

لندن میں قائم شامی آبزرویٹری برائے انسانی حقوق کے سربراہ رامی عبدالرحمان نے بتایا ہے کہ اسدی فوج باغیوں سے کوئی ایک علاقہ بھی واپس لینے میں کامیاب نہیں ہوسکی ہے۔

انھوں نے بتایا کہ ''شامی فوج خالدیہ اور قدیم شہر پر توپ خانے سے گولہ باری کررہی ہے اور فضا سے جنگی طیارے بارود برسا رہے ہیں۔گذشتہ دوروز میں ان علاقوں میں باغیوں کے ساتھ جھڑپوں میں فوج اور اس کے ساتھ مل کر لڑنے والی نیشنل ڈیفنس فورس کے بتیس اہلکار مارے گئے ہیں''۔

ان کا کہنا تھا کہ اب ہم اس بات کی تصدیق کرسکتے ہیں کہ حزب اللہ کے جنگجو خالدیہ کے محاذ پر جیش الحر کے جنگجوؤں سے لڑرہے ہیں اور وہ علویوں کے آبادی والے علاقے زہرا کو اپنے لیے بیس کے طور پر استعمال کررہے ہیں۔

بشارالاسد کی وفادار فوج نے باغیوں کے زیر قبضہ علاقوں کا کنٹرول واپس لینے کے لیے حمص اور اس کے نواحی علاقوں میں ایک نئی کارروائی کررہی ہے۔گذشتہ دوروز کے دوران شامی فوج نے خالدیہ کے علاوہ باب ہود ،حمیدیہ اور بوستان الدیوان سمیت حمص کے مختلف علاقوں میں گولہ باری کی تھی۔

آبزرویٹری کی ایک اور اطلاع کے مطابق اسدی فورسز نے دارالحکومت دمشق اور اس کے نواحی علاقوں میں بھی باغیوں کے ٹھکانوں پرگولہ باری جاری رکھی ہوئی ہے اور آج فلسطینی مہاجرین کے کیمپ یرموک اور داریا پربھی گولہ باری کی گئی ہے۔تاہم دم تحریر ان حملوں میں مرنے والوں کے بارے میں کوئی اطلاع نہیں تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں