.

مصری ایوان صدر نے فوج کا بیان مسترد کر دیا

بیان صدر مرسی کو بتائے بغیر جاری کیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصری ایوان صدر نے منگل کے روز ایک بیان جاری کیا ہے جس میں دوٹوک الفاظ میں واضح کیا گیا کہ صدر محمد مرسی نے مسلح فوج کی جنرل کمان کے بیان پر نظرثانی نہیں کی تھی۔ "فوجی بیان میں ایسا مفہوم پنہاں تھا کہ جو ملکی مسائل میں اضافے کا باعث بن سکتا ہے۔"

صدارتی بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ مصر کی جدید جمہوری سول ریاست 25 جنوری 2011ء کے قابل قدر انقلاب کا ثمر ہے۔ مصر میں طاقت کے تمام مراکز ملک کو ماضی کی صورتحال کی جانب لوٹنے سے روکیں گے۔

بیان کے مطابق ڈاکٹر محمد مرسی کی حکومت کا ایک برس مکمل ہونے پر قوم سے حالیہ خطاب قومی مفاہمت کے لئے عملی اقدامات کا واضح بیان تھا۔

ایوان صدر نے اس بات پر زور دیا تھا کہ وہ قومی مصالحت کے آغاز سے پہلے کے مرحلے کے طے شدہ لائحہ عمل کو نافذ کر رہی ہے، اس ضمن میں وہ ان تمام بیانات کو خاطر میں نہیں لا رہی ہے کہ جن کا مقصد قومی وحدت پر ضرب لگانا اور معاشرے کا امن خراب کرنا ہے، قطع نظر کہ ایسے منصوبے تیار کرنے والوں کے اپنے کیا مقاصد ہیں۔