عدلی منصور مصر کے نئے عبوری صدر نامزد، آج حلف اٹھائیں گے

نئے صدر کا عدلیہ سے وابستہ رہے ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

مصر میں سابق منتخب صدر ڈاکٹر محمد مُرسی کی حکومت کی بساط لپیٹنے کے بعد مسلح افواج نے سپریم دستوری عدالت کے چیف جسٹس بیرسٹر عدلی منصور کو ملک کا نیا عبوری صدر نامزد کیا ہے۔ صدر آج [جمعرات] اپنے عہدے کا حلف اٹھائیں گے۔ حلف اٹھانے کے بعد صدر قبل از وقت صدارتی انتخابات کا اعلان کریں گے اور ایک عبوری کابینہ تشکیل دیں گے جو ملک میں نئے دستور کی تدوین کا کام ازسرنو شروع کرے گی۔

اڑسٹھ سالہ عدلی منصور اس سے قبل سنہ 1970ء میں ایوان صدر کے فتاویٰ بورڈ کے رکن بھی رہ چکے ہیں۔ ان کا پورا کیریئر عدلیہ سے وابستہ رہا ہے۔ انہیں حال ہی جسٹس ماہر الجبیر کی ریٹائرمنٹ کے بعد ملک کی سپریم دستوری عدالت کا چیف جسٹس مقررکیا گیا تھا۔ اس سے قبل وہ دس سال تک سپریم دستوری عدالت میں ئائب چیف جسٹس کے عہدے پرخدمات انجام دیتے رہے ہیں۔

انہوں نے سنہ 1967ء میں انسانی حقوق کے مضمون میں ڈگری حاصل کی۔ اس کے تین سال بعد سنہ 1970ء میں قانون کا ڈپلومہ حاصل کیا اور فورا ہی وکالت شروع کردی۔ جس کے بعد وہ ترقی کرتے ہوئے ریاستی کونسل کے سربراہ مقرر ہوئے۔ بعد ازاں کئی سال تک مختلف عدالتوں میں بطور جج خدمات انجام دیتے رہے ہیں۔ ان کا شمار ملک کے اعتدال پسند حلقوں میں ہوتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں