مرسی کو رہا اور ٹی وی نشریات بحال کی جائیں: شیخ الازہر

"امید ہے ملک کو انتشار سے جلد نجات مل جائے گی"

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر کی سب سے بڑی دینی درسگاہ جامعہ الازہر کے سربراہ ڈاکٹر احمد الطیب نے عبوری حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ معزول صدر ڈاکٹرمحمد مرسی کو فوری طور پر رہا کیا جائے پر زور دیتے ہوئے تمام نیوز چینلوں اور مذہبی چینلوں کی نشریات بحال کی جائیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق اپنے ایک بیان میں شیخ الازھر نے مسلح افواج مصر کی، سیکیورٹی اداروں اور سیاسی جماعتوں سے توقع ظاہر کی ہے کہ وہ شہریوں کے جان ومال کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے اپنی ذمہ داریاں بہ احسن انجام دیں گے اور ملکج لد ہی موجودہ انتشارسےباہرنکل آئے گا۔

خیال رہے کہ چار روز قبل فوج کے ہاتھوں مُنتخب آئینی صدر ڈاکٹر محمد مرسی کی حکومت کا تختہ الٹے جانے کے بعد وزیرداخلہ جنرل محمد ابراہیم نے کئی مذہبی اور نیوز چینلوں کی نشریات پرپابندی لگا دی تھی۔ ان ٹی وی چینلوں میں "مصر25"،" الناس"،"الحافظ" اور سلفیوں کے نمائدہ ٹی وی "امجاد"ٹی وی شامل ہیں۔

ادھرقاہرہ میں ایک سرکردہ فوجی ذریعے نے اطلاع دی ہے کہ سابق صدر کوسیکیورٹی وجوہات کی بناء پرملٹری ہیڈ کواٹر سے وزارت دفاع کے ہیڈ کواٹرمیں منتقل کر دیا گیا ہے۔ ان کے ساتھ حراست میں لیے گئے اخوان المسلمون کے دیگر رہ نماء تاحال ملٹری ہیڈ کواٹر ہی میں زیر حراست ہیں۔ فوجی ذرائع نے اس بات کا بھی اشارہ دیا کہ معزول صدر محمد مرسی پرعائد الزامات کے تحت مقدمہ بھی چلایا جا سکتا ہے۔

قبل ازیں جمعرات کو اخوان المسلمون کے ترجمان جہاد الحداد نے بتایا تھا کہ ڈاکٹر محمد مرسی کو ملٹری ہیڈ کواٹر سے وزارت دفاع میں منتقل کیا جا رہا ہے۔ الحداد کے بہ قول" معزول صدرکو ان کے ساتھیوں سے الگ کردیا گیا ہے اور انہیں تنہا وزارت دفاع کے ہیڈ کواٹرمیں لے جانے کی تیاریاں کی جا رہی ہیں"۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں