سعودی حکومت کا عمرہ ویزہ کے اجراء کی مدت میں توسیع کا فیصلہ

عمرہ کی مدت 'تیس' کے بجائے 'پندرہ' دن مقرر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب کی وزارت حج نے ماہ صیام میں عمرہ کے خواہش مند مسلمانوں کی سہولت کے لیے عمرہ ویزا کےاجراء کی مدت میں اضافہ کیا ہے جبکہ عمرہ کےمناسک کی ادائی ماہ صیام کے تیس دن جاری رکھنے کے بجائے اسے کم کرکے پندرہ دن کردیا گیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق وزارت حج کی جانب سے جاری ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ محکمہ حج نے وزارت خارجہ سے مشورے کے بعد غیرملکی معتمرین کی سہولت کے لیے عمرہ ویزوں کے اجراء کا عمل یکم رمضان سے بڑھا کر دس رمضان المبارک تک کردیا ہے۔ اس کے ساتھ عمرہ کے مناسک کی ادائیگی کے لیے تیس دن کے کا وقت مقرر کرنے کے بجائے اسے کم کرکے پندرہ دن کردیا گیا ہے، تاکہ کم سے کم وقت میں زیادہ سے معتمرین اس فریضے کی ادائیگی سے بہرہ ور ہو سکیں۔

وزارت حج کے اعداد و شمار کے مطابق اس سال ماہ صیام میں عمرہ ادا کرنے والوں کی تعداد چالیس سے پچاس لاکھ کے درمیان ہوگی۔ عمرہ ادائیگی کے بعد حرم میں صرف تین لاکھ متعمرین رہ جائیں گے۔

سعودی وزارت حج سے متعلق امور کے سیکرٹری ڈاکٹر عیسیٰ رواس نے "العربیہ ڈاٹ نیٹ" کو بتایا کہ "جس طرح کی سخت شرائط اور نظم ضبط حج کے موقع پر لازمی ہوتا ہے، عمرہ کے دوران ایسی کڑی شرائط عائد نہیں کی جائیں گی۔ کسی بھی عازم حج کو دوسرا حج پانچ سال سے قبل ادا کرنے کی اجازت نہیں دی جاتی، جبکہ معتمرین اس قید سے مستثنیٰ ہوتے ہیں۔

ایک دوسرے سوال کے جواب میں ڈاکٹر رواس نے کہا کہ عمرہ کی ادائیگی پورے سال میں جاری رہتی ہے۔ یہ کسی خاص وقت اور مہینے سے مشروط نہیں، اس لیے اس کے لیے کوئی اضافی قیود بھی نہیں۔ البتہ حرم شریف کی تعمیرو توسیع کے جاری منصوبوں کے باعث بیرون ملک سے پچاس فی صد جبکہ اندرون ملک سے بیس فی صد معتمرین کوعمرہ ادا کرنے کی اجازت ہوگی۔

ڈاکٹررواس کا کہنا تھا کہ حکومت عمرہ کی ادائیگی کے بعد بیرون ملک سے آئے مہمانوں کو فورا واپس کردیا جائے گا۔ اس سلسلے میں حکومت معتمرین کولانے والی کمپنیوں سے بھی رابطےمیں رہے گی تاکہ عمرہ کی ادائیگی کے بعد کوئی شخص یہاں بلا جواز نہ ٹھہرے اور نئے معتمرین کو فریضہ کی ادائیگی کا موقع فراہم کرے۔ انہوں نے کہا کہ ہم کسی عمرہ ٹورآپریٹر کمپنی کے خلاف کارروائی نہیں کر رہے ہیں۔ سعودی حکومت جواقدامات بھی کرے گی وہ معتمرین اورحجاج کرام کی سہولت اور آسائش کے لیے ہی کرے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں