مصر: محمد البرادعی کو وزیر اعظم مقرر کرنے کا اعلان واپس

البرادعی کے حامیوں نے ان کی تقرری کی خبر پر بے پناہ اظہار مسرت کیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

مصر کے اپوزیشن رہنما ڈاکٹر محمد البرادعی کو عبوری وزیر اعظم مقرر کرنے کا اعلان واپس لے لیا گیا ہے۔ اسلامی جماعتوں کی طرف سے ڈاکٹر البرادعی کے نام کو مسترد کردیا گیا تھا۔

مصر کے نئے عبوری صدر عدلی منصور کے ترجمان احمد المسلمانی نے نیوز کانفرنس کو بتایا کہ عبوری وزیر اعظم کے لیے متعدد نام زیر غور ہیں لیکن ابھی تک روشن خیال اور اصلاحات پسند محمد البرادعی کے حق میں کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا۔ احمد المسلمانی نے ایسے خیالات کو مسترد کیا ہے کہ البرادعی کا نام مذہبی گروپوں کے دباؤ کی وجہ سے واپس لیا جا رہا ہے۔

اس سے پہلے محمد البرادعی کو مصر کا عبوری وزیراعظم مقرر کرنے کا اعلان سامنے آیا تھا۔ مصر کی سرکاری نیوز ایجنسی مڈل ایسٹ نیوز ایجنسی 'مینا' کے مطابق کہ البرادعی کی عبوری صدر عدلی منصور کے ساتھ ملاقات کے بعد انہیں عبوری وزیراعظم مقرر کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ ان کی تقرری کی خبر کا ان کے حامیوں کی طرف سے پُرجوش انداز میں استقبال کیا گیا۔ دارالحکومت میں اتحادیہ صدارتی محل کے باہر ان کے ہزاروں کارکنوں نے خوشی کا اظہار کرتے ہوئے نہ مصری پرچم لہرائے بلکہ دیر تک گاڑیوں کے ہارن بھی بجاتے رہے۔

نئے وزیراعظم کی تقرری کا اعلان اخوان المسلمون کی طرف سے شہر نَصر میں ہونے والے احتجاجی مظاہرے کے بعد کیا گیا تھا۔ سابق صدر محمد مرسی کی بحالی کے لیے ہونے والے احتجاجی مظاہروں میں اب تک درجنوں افراد ہلاک جبکہ سینکڑوں زخمی ہو چکے ہیں۔ مصر میں بدھ کے روز فوج کی جانب سے مصر کی تاریخ میں پہلی مرتبہ جمہوری طور پر منتخب صدر کو برطرف کر دیا گیا تھا۔

مبصرین کے مطابق البرادعی کی وزیراعظم کے طور پر تقرری کوئی حیران کن عمل نہیں تھا۔ جس وقت جنرل عبدالفتاح السیسی محمد مرسی کی معزولی کا اعلان کر رہے تھے، اس وقت البرادعی ان کی ساتھ والی سیٹ پر براجمان تھے۔ یہ واضح اشارہ تھا کہ نئی حکومت میں البرداعی اہم کردار ادا کریں گے۔ نئی پیش رفت سے پہلے توقع کی جارہی تھی کہ البرداعی جلد ہی حلف اٹھا لیں گے۔

ڈاکٹر البرادعی کو سن 2005 ء میں نوبل امن انعام سے اُس وقت نوازا گیا تھا جب وہ بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی کے سربراہ تھے اور ان کی مصر واپسی مصر کے سابق صدر حسنی مبارک کے خلاف شروع ہونے والے احتجاجی مظاہروں کے دوران ہوئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں