.

الجزائر اور یورپی یونین کے درمیان توانائی معاہدہ

توانائی کے روائتی شعبے میں تعاون کے ساتھ ٹکنالوجی منتقلی بھی ہو گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شمالی افریقا کے اہم ملک الجزائر اور یورپی یونین نے فروغ توانائی کے لیے تعاون کی ایک مفاہمتی یادداشت پر دستخط کیے ہیں۔ یورپی یونین کمیشن کے صدر مینول براسو الجزائر کے ساتھ اس پیش رفت کو 'تزویراتی دستاویز' قرار دیا ہے۔

انہوں نے اس امر کا اظہار نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ توانائی کے شعبے میں دو طرفہ تعاون کے لیے یورپی یونین اور الجزائر کے درمیان 2008 سے گفت و شنید جاری تھی۔ پانچ سال تک جاری رہنے والے ان مذاکرات کے بعد یورپی یونین کے مینول براسو اور الجزائری وزیر اعظم عبدالمالک سیلال نے مفاہمتی یادداشت پر دستخط کیے ہیں۔ اس معاہدے کے تحت توانائی کے روائتی شعبے میں تعاون کے ساتھ ساتھ ٹکنالوجی کی منتقلی بھی ممکن ہو گی۔ جس کے نتیجے میں الجزائر میں سرمایہ کاری میں اضافہ ہو سکے گا۔

الجرائر، روس اور ناروے کے بعد یورپ کو قدرتی گیس فراہم کرنے والا تیسرا بڑا ملک ہے جس سے اٹھائیس رکنی یورپی بلاک کی تیرہ سے پندرہ فیصد ضروریات پوری کرنے میں مدد ملتی ہے۔