عراق: الانبار میں فوجی چیک پوائنٹ پر فائرنگ، 14 اہلکار ہلاک

کسی گروپ نے عراقی فوجیوں پر حملے کی ذمے داری قبول نہیں کی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

عراق کے مغربی صوبہ الانبار میں مسلح حملہ آوروں نے افطاری کے دوران فوج کے ایک چیک پوائنٹ پر حملہ کردیا ہے جس کے نتیجے میں چودہ اہلکار مارے گئے ہیں۔

عراقی حکام کے مطابق مسلح حملہ آوروں نے صوبے الانبار میں دریائے فرات کے کنارے واقع قصبے بروانا میں بدھ کی شام فوجی چیک پوائنٹ پر دھاوا بولا تھا۔اس وقت عراقی فوجی روزہ کھولنے میں مصروف تھے۔یہ قصبہ مغربی شہر حدیثہ سے بالمقابل دریائے فرات کے دوسرے کنارے پر واقع ہے۔

مسلح حملہ آوروں نے تیل کی صنعت کے لیے مخصوص پولیس فورس کے زیراستعمال ایک ٹریلر پر فائرنگ کردی۔بروانا کے مئیر عبدالمحسن نے بتایا ہے کہ ''حملے کے وقت فوجی روزہ افطاری میں مصروف تھے۔چیک پوائنٹ پر فائرنگ سے تین فوجی ہلاک ہوئے ہیں اور ٹریلر پر فائرنگ سے گیارہ اہلکاروں کی ہلاکت ہوئی ہے''۔

کسی گروپ نے عراقی فوج پر اس حملے کی ذمے داری قبول نہیں کی۔تاہم ماضی میں عراق میں القاعدہ کی مقامی تنظیم پر سکیورٹی فورسز اور اہل تشیع پر حملوں کے الزامات عاید کیے جاتے رہے ہیں۔ جنگجوؤں کا صوبے الانبار میں حالیہ مہینوں میں یہ ایک بڑا حملہ ہے۔واضح رہے کہ عراق میں اپریل کے بعد تشدد کے واقعات میں دو ہزار سے زیادہ افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں