ماہ صیام میں معتمرین کے تحفظ کے لیے خصوصی سیکیورٹی پلان تیار

امن وامان کے قیام کے لیے مکہ مکرمہ میں 30 ہزار اضافی اہلکار تعینات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی حکومت نے خادم الحرمین الشریفین شاہ عبداللہ کی ہدایت پرماہ صیام میں معتمرین کے تحفظ کے لیے خصوصی سیکیورٹی پلان ترتیب دیا ہے۔

نئے سیکیورٹی پلان کے بعد حرم مکی اور مکہ مکرمہ میں بیرون ملک سے آنے والے اللہ کے مہمانوں کے تحفظ اور شہر میں امن وامان برقرار رکھنے کے لیے 14 ہزار پانچ سواضافی سیکیورٹی اہلکار تعینات کیے گئے ہیں۔ جبکہ مجموعی طورپر اکتیس ہزار سیکیورٹی اہلکار امن وامان کے قیام پرمامور ہیں۔

بیرون ملک سے آنے والے معتمرین اورنمازیوں کے لیے خصوصی سیکیورٹی فورس کے علاوہ فارسی، اردو، انگریزی اور فرانسیسی زبانوں پرعبور رکھنے والے مترجمین کی خدمات بھی فراہم کی گئی ہیں، جو عربی زبان نہ ناواقف معتمرین کے لئے ترجمانی کے فرائض سرانجام دیں گے۔ مختلف زبانوں کے مترجمین کی سہولت کے علاوہ خصوصی افراد کے لیے اشاروں کی زبان کے ذریعے ابلاغ کرنے والے ماہرین کی خدمات بھی فراہم کی گئی ہیں۔

مکہ مکرمہ میں اہم مقامات کی سیکیورٹی کے لیے اضافی نفری تعینات کرنے کے ساتھ چالیس اہلکاروں پر مشتمل موبائل گروپ تشکیل دیے گئے ہیں، جو چوبیس گھنٹے کی بنیاد پرشہر میں امن وامان کی صورت حال پرنظر رکھیں گے۔ ان کے ساتھ معاونت کے لیے خفیہ اہلکاروں کے دستے بھی گشت پر مامور ہیں۔ سیکیورٹی اہلکاروں کے علاوہ معتمرین اور زائرین کی مدد کے لیے رضاکار فورس بھی تشکیل دی گئی ہے جو معتمرین کی شکایات کے ازالے اور انہیں درپیش کسی بھی قسم کی مشکلات کے ازالے میں ان کی مدد کرے گی۔

مکہ معظمہ میں ٹریفک کا نظام رواں رکھنے کے لیے مسجد حرام کو ملانے والی تمام شاہراؤں، چوکوں اور پارکنگ کے مقامات پر ٹریفک پولیس کے اہلکار تعینات کیے گئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں