بھارت نے 162 سال قدیم ٹیلی گرام سروس کو خیرباد کہہ دیا

رابطے کا قدیم ذریعہ جدید مواصلاتی دور کا سفید ہاتھی بن گیا تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

بھارت میں 162 سال قدیم ٹیلی گرام سروس اتوار کو آخری بار کام کے بعد ہمیشہ کے لئے بند کی جا رہی ہے۔ بھارتی ٹیلی گرام آفس کا شمار دنیا کی آخری سب سے بڑی کمرشل ٹیلی گرام آپریشن سروس ہے۔ تار یا وائر کے نام سے مشہور اس سروس کو مالیاتی خسارے کے بڑھتے ہوئے بوجھ کے سبب بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔


اس سروس سے سالانہ 75 لاکھ آمدنی حاصل ہو رہی تھی جب کہ اسے چلانے کے لئے 100 کروڑ روپے خرچ ہو رہے تھے۔ ملک میں موبائیل فونز اور انٹرنیٹ کے فروخت کے بعد ٹیلیگرام کا استعمال بھی کم ہو گیا تھا۔

کولکتہ اور ڈائمند ہاربر کے درمیان 1850ء میں پہلی تجرباتی الکٹرک ٹیلیگراف لائن شروع کی گئی تھی اور اس کے ایک سال بعد ایسٹ انڈیا کمپنی کے استعمال کے لئے اس کا آغاز کیا گیا تھا۔ سنہ 1854ء میں یہ خدمات عوام کے لئے دستیاب کرائی گئی تھی۔

ملک میں تقریباً 75 ٹیلیگرام سینٹرز کام کر رہے تھے تھے چلانے کے لئے تقریباً ایک ہزار ملازمین کو مامور کیا گیا تھا، اب ان ملازمین کی خدمات موبائیل سروس، لینڈ لائن، ٹیلی فون اور براڈ بینڈ کے شعبوں کو منتقل کی جا رہی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں