.

امام مسجد سمیت سات شہریوں کی شہادت پرکشمیر میں ہڑتال

بھارتی سیکورٹی اداروں نے حریت رہنماوں کو نظر بند کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بھارت کے زیر کنٹرول کشمیر کے جنوبی شہر رام بن کے نواح میں بارڈر سکیورٹی فورس کے ہاتھوں نماز تراویح پڑھاتے امام مسجد سمیت سات کشمریوں کو گولی مار کر شہید کیے جانے کے خلاف آج حریت رہنماوں اور مختلف تنظیموں کی اپیل پرکشمیر کے بیشتر حصوں ہڑتال ہے۔ بھارتی پیرا ملٹری دستوں نے جمعرات کی رات کشمیرکے دارالحکومت سرینگر سے دور ضلع رام بن کے علاقے گلاب گڑھ کی مقامی مسجد میں نماز تراویح پڑھانے والے امام مسجد کو پہلے زدوکوب کیا اور بعدازاں گولی مار دی جس سے امام مسجد جاں بحق ہو گیا۔

اس واقعے کے خلاف سینکڑوں کشمیری سڑکوں پر نکل آئے اور بی ایس ایف کے اس بہیمانہ اقدام پر احتجاج کرنے لگے ، بعد ازاں بھارتی سیکورٹی اہلکاروں نے مظاہرین پر بھی فائر کھول دیا، میڈیا رپورٹس کے مطابق اس فائرنگ سے کم از کم سات کشمیری مظاہرین جاں بحق ہو گئے تھے۔ بھارتی سیکورٹی اداروں کی ان بہیمانہ کارروائیوں کے خلاف مختلف کشمیری تنظیموں نے آج کی ہڑتال کی کال دی تھی۔

ہڑتال کی اپیل پر کشمیر کے اکثر علاقوں میں شٹر ڈاون رہا اورابتدائی اطلاعات کے مطابق بعض علاقوں میں مظاہرین اور بھارتی سیکورٹی اہلکاروں کے درمیان مڈبھیڑ بھی ہوئی ،جس سے متعدد افراد زخمی ہو گئے۔ بھارتی پولیس نے اس موقع پر حریت رہنماوں کو نظر بند کر دیا۔