بھارتی ڈاکٹرآٹھ برس مریضوں کو غیر قانونی ادویہ استعمال کراتا رہا

دو سال قید اورلاکھوں ڈالر جرمانہ کی سزا، اہلیہ ٹیکس چور نکلی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

موٹاپے کی علاج گاہ کے مالک بھارتی نژاد امریکی ڈاکٹر کو دو سال قید اور ساڑھے سات لاکھ ڈالرجرمانہ کی سزا سنائی ہے۔ بھارتی ڈاکٹر کی اہلیہ کو بھی کلینکس کے ٹیکسوں کے معاملات میں ہیرا پھیری کرنے کے جرم میں قید بھگتنا اورجرمانہ ادا کرنا ہو گا۔

ستاون سالہ ڈاکٹر راکیش نے اعتراف کیا ہے کہ2002 سے 2010 تک اس نے اپنے مریضوں کو لاکھوں کی تعداد میں ممنوعہ گولیاں استعمال کرائیں ، جبکہ راکیش کی 53 سالہ اہلیہ مینا آنند کو انڈیانا اور ایلونائی میں موجو د مشترکہ ملکیتی کلینکوں کے ٹیکسوں کے معاملات میں گڑبڑ کرنے پر ایک لاکھ ڈالر جرمانہ اور ایک ماہ قید سزا سنائی گئی ہے۔۔

امریکی عدالت نے بھارتی داکٹر اور اہلیہ کو یہ حکم بھی دیا ہے کہ اپنے ضبط شدہ 5.2 ملین ڈالر واپس لینے کے لیے سات لاکھ پنتالیس لاکھ آتھ سو بہتر ڈالر جمع کرائیں۔ ڈاکٹر راکیش نے اپنے اعتراف میں عدالت کو بتایا تھا کہ اس نے ایک اور بھارتی ڈاکٹر دنیش کے ساتھ مل کر آٹھ برسوں کے دوران انسانی صحت کے لیے مضردس لاکھ گولیاں خرید کر مریضوں کو دی ہیں۔ ڈاکٹر دنیش نے اس مقدمے کی سماعت کے دوران عدالت کے ساتھ تعاون کیا تاہم اس کے بارے میں عدالتی فیصلہ 30 جولائی کو سامنے آنے کا امکان ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں