شام کے خلاف جہاد کا ارادہ نہیں: مصری وزیر خارجہ

مصر شام سفارتی تعلقات بحالی کے بارے میں کچھ نہیں کہہ سکتا، نبیل فہمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر کے عبوری وزیر خارجہ نبیل فہمی نے مصر اور شام کے درمیان مستقبل میں تعلقات کے حوالے سے عبوری حکومت کی پالیسی واضح نہ کرنے کے باوجود کہا ہے کہ ''مصر کا شام کے خلاف جہاد کرنے کا کوئی ارادہ نہیں۔" قاہرہ میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ''مصر شامی عوام کی آزادی کی خواہش کی حمایت کرتا ہے ۔''

شام اور مصر کے سفارتی تعلقات کو اس وقت دھچکا لگا تھا جب معزول مصری صدر ڈاکٹر محمد مرسی کی جماعت اخوان المسلمون نے سنی علماء کی جانب سے شامی حکومت کے خلاف کیے گئے اعلان جہاد کی حمایت کی تھی۔ بعد ازاں صدر مرسی نے 15 جون کو "شامی بغاوت کی حمایت" کے عنوان سے منعقد ہونے والی ایک کانفرنس میں شام کے ساتھ سفارتی تعلقات منقطع کرنے کا اعلان کیا تھا۔

اس اعلان کے بعد مصر نے دمشق میں اپنا سفارتخانہ اور قاہرہ میں قائم شامی سفارتی مشن کو بند کردیا تھا۔ تاہم نبیل فہمی کا کہنا ہے کہ مرسی کے ان تمام فیصلوں پر نظرثانی کی جائیگی۔

خبر رساں اداروں کے مطابق وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ "شام کے ساتھ سفارتی تعلقات منقطع کرنے کے فیصلے پر نظر ثانی کی جائیگی۔" ان کا مزید کہنا تھا کہ "اس کا یہ مطلب نہیں ہے کہ تعلقات بحال کردئیے جائینگے یا بحال نہیں ہوں گے۔"

نبیل فہمی نے صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ وہ شام میں جاری بحران کا سیاسی حل تلاش کرنے کی حمایت کرتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں