سیناء کے علاقے میں تین مشتبہ عسکریت پسند کار بم دھماکے میں ہلاک

نامعلوم عسکریت پسندوں کے العریش داخلے پر کار زوردار دھماکے سے تباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر کے سیکیورٹی حکام کے مطابق جزیرہ نما سیناء کے علاقے میں تین عسکریت پسند بدھ کے روز اس وقت ہلاک ہو گئے جب علاقے میں اپنے ہدف کے تعاقب میں ان کی کار زور دار دھماکے سے تباہ ہو گئی۔

کار میں دھماکا اس وقت ہوا جب نامعلوم عسکریت پسند سیناء کے قصبے العریش میں داخل ہوئے۔ اس جگہ بدھ کے روز صبح ہونے والی فائرنگ سے دو مصری فوجی ہلاک ہو گئے تھے۔

ادھر مصری فوج کے سربراہ اور عبوری وزیر دفاع میجر جنرل عبد الفتاح السیسی نے بدھ کے روز اپنی تقریری میں عوام سے مطالبہ کیا کہ وہ فوج کی جانب سے 'دہشت گردی اور تشدد' کی بیخ کنی کی کوششوں کی حمایت میں جمعہ کے روز احتجاجی ریلیاں اور جلسے جلوس منعقد کریں۔

اخوان المسلمون نے جنرل السیسی کے بیان کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ "اب بلی تھیلے سے باہر آ گئی ہے اور دنیا پر واضح ہو گیا ہے کہ مصر کے اصل حکمران کون ہیں؟ اخوان المسلمون نے جنرل السیسی کے بیان کو 'خانہ جنگی' کی اپیل قرار دیتے ہوئے کہا کہ فوجی سربراہ نے ایسی بات یہ جانتے ہوئے کہی کہ جمعہ کو اخوان المسلمون نے فوجی اقدام کے خلاف مظاہروں کی کال دے رکھی ہے۔

جولائی کے آغاز میں جمہوری طور پر منتخب صدر محمد مرسی کی فوج کے ہاتھوں برطرفی کے بعد سے مصر میں سیاسی کشیدگی روز بروز بڑھ رہی ہے۔ مسلح افواج کے سربراہ کی جانب سے مظاہروں کی کال کے بعد صدر مرسی کے حامیوں اور مخالفین کے درمیان تصادم اور تشدد بڑھنے کا خدشہ مزید تقویت پکڑ رہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں