.

بُش سینیئر کا سر منڈوا کر سرطان میں مبتلا بچے سے اظہار یکجہتی

ریٹایرئمنٹ کے بعد بش نے زندگی فلاحی کاموں کے لئے وقف کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سابق امریکی صدرجارج بُش سینیئرنے کینسرکے موذی مرض میں مبتلا ایک دوسالہ بچے سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے اپنا سرمنڈوا دیا۔ سرطان میں مبتلا دو سالہ پیٹرک بُش سینیئر کے ایک ذاتی محافظ کا بیٹا ہے۔

سابق امریکی صدر کے دفتر کے ترجمان جیم میک گریتھ نے بتایا کہ 89 سالہ سابق صدر بُش سینئر نے"یونائیٹڈ اسٹیٹ سیکریٹ سروس" کے ملازمین کی مثال زندہ کرتے ہوئے پیٹرک کے ساتھ ہمدردی میں اپنا سر منڈوا دیا۔ خیال رہے کہ "سیکریٹ سروس" امریکا میں سابق صدورکے تحفظ کا ذمہ دار ادارہ سمجھا جاتا ہے۔ کچھ عرصہ قبل اس ادارے کے ایک کارکن کے جسم میں سرطان کی تشخیص ہوئی تھی تو ادارے کے دیگر ارکان نے اس سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے اپنے سر منڈوا دیے تھے۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ سابق بُش سینیئراور ان کی اہلیہ نے ننھے پیٹرک کے علاج کے لیے معاونت کرنے والے ایک خیراتی ادارے کو فنڈز بھی فراہم کیے۔ یاد رہے کہ بُش سینیئر کا اپنا ایک بیٹا بھی ساٹھ سال قبل کینسر کے باعث جاں بحق ہو گیا تھا۔

سابق صدر کے ترجمان مسٹر میک گریتھ نے میڈیا کو کینسرکے مریض بچے کو گود میں اٹھائے بُش سینیئر کی تصاویر بھی دکھائیں۔ ایک تصویر میں سابق صدر کے پاس کئی دوسرے افراد بھی مریض بچے سے اظہار یکجہتی میں سرمنڈائے کھڑے دیکھے جا سکتے ہیں۔

یاد رہے کہ بُش سینیئر سنہ 1989ء سے 1993ء تک امریکا کے صدر رہے ہیں۔ ملک کے طاقتور ترین عہدے سے سبکدوشی کے بعد انہوں نے خود کو فلاحی سرگرمیوں کے لیے وقف کردیا تھا۔ حال ہی میں صدر باراک اوباما نے جارج بُش سینیئر کی رفاہی خدمات کے اعتراف میں ان کے اعزاز میں وائٹ ہاؤس میں ایک تقریب بھی منعقد کی تھی، جس میں کئی سابق صدور نے بھی شرکت کی تھی۔