حرم مکی میں 750 کیمروں کے ذریعے معتمرین کی فول پروف سیکیورٹی

ٹکنالوجی کے ذریعے اللہ کے مہمانوں کی حفاظت کا فریضہ آسان ہو گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مسجد حرام اور خانہ کعبہ کی زیارت کے آنے والے فرزندان توحید کی تعداد ہمیشہ لاکھوں میں رہتی ہے۔ اتنی بڑی تعداد میں بنی نوع انسانوں کی حفاظت کسی بڑے چیلنج سے کم نہیں، لیکن جدید ٹکنالوجی نے حرمین شریفین کی انتظامیہ کے لیے اس فریضے کی ادائی میں آسانی پیدا کر دی ہے۔ اژدہام والے مقامات کی نشاندہی اور حجاج و معتمرین کی نگرانی کے لیے سیکڑوں کی تعداد میں جدید خفیہ کیمرے استعمال کیے جا رہے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق حرم مکی میں انتظامیہ اور زائرین دونوں کی سہولت کے لئے 750 خفیہ کیمرے نصب کیے گئے ہیں جو چوبیس گھنٹے کی بنیاد پر زائرین کی نقل وحرکت کو آواز اور تصویرکے ساتھ محفوظ کر رہے ہیں۔ جدید تکنیک کے استعمال سے نہ صرف زائرین کی نگرانی آسان ہوگئی ہے بلکہ معتمرین اور معتکفین حضرات کو بھی ایک اضافی سہولت میسر ہے۔

رپورٹ کے مطابق رمضان المبارک میں ہرسال معمول کے مطابق معتمرین کی تعداد میں کئی گنا اضافہ ہوجاتا ہے لیکن ماہ صیام کے آخری عشرے میں یہ تعداد غیرمعمولی حد تک بڑھ جاتی ہے۔ زائرین کا رش بڑھ جانے کے باعث حفاظتی نقطہ نظر سے اضافی نفری بھی تعینات کرنا پڑتی ہے، لیکن اس سال رضاکاروں کی تعیناتی کے بجائے کیمروں کے ذریعے نگرانی پر توجہ دی گئی ہے۔

خفیہ کیمروں کی مدد سے نہ صرف رش والے مقامات کی نشاندہی ہوتی ہے بلکہ کہیں بھی کسی ناخوشگوار واقعے سے نمٹنے کے لیے فوری کارروائی عمل میں لانے میں بھی سہولت ہوجاتی ہے۔ خفیہ کیمروں کے ذریعے نگرانی پر مامورعملہ زائرین کی نقل وحرکت میں روانی رکھنے کے لیے فوری حرکت میں آتا ہے اور حسب ضرورت ہنگامی راستے کھولے اور بند کیے جاتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں