لیبیا: نائب وزیراعظم مستعفی، بے اختیاری کی شکائت

استعفی بن غازی میں سیاسی رہنما کے قتل کے تناظر میں اہم ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

لیبیا کے نائب وزیر اعظم عوض البرعصی نے بے اختیاری سے تنگ آ کر اپنے منصب سے استعفی دے دیا ہے۔ نائب وزیر اعظم نے اپنے تحریر کردہ استعفے میں لکھا ہے کہ''میں ایک غیر فعال حکومت کے ساتھ کام نہیں کر سکتا، جس میں میرے اختیارات بھی کھو چکے ہوں''

نائب وزیر اعظم نے استعفی کے موقع پر وزیر اعظم علی زیدان کی کابینہ پر تنقید کرتے ہوئے کہا'' کابینہ درپیش مسائل حل نہیں کر پا رہی۔'' واضح رہے نائب وزیر اعظم کا استعفی ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب صرف ایک ہفتہ قبل لیبیا کے وزیر اعظم علی زیدان نے اپنی کابینہ میں تبدیلی کرنے کا اعلان کیا تھا۔ وزیر اعظم کے بقول یہ فیصلہ مسائل اور خصوصا مشرقی شہربن غازی میں ہلاکتوں کے بعد بھڑکنے والے پرتشدد واقعات سے نمٹنے کے لیے ضروری ہو گیا ہے۔

لیبیا کے اہم مشرقی شہر بن غازی میں پرتشدد مظاہرے اخوان مخالف سیاسی رہنما کے قتل کے باعث شروع ہوئے جبکہ مستعفی ہنے والے نائب وزیر اعظم اخوان المسلمون کے حامی سمجھے جاتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں