.

سوڈاںی صدر کو سعودی فضائی حدود سے گزرنے سے روک دیا

عمر البشیر نو منتخب ایرانی صدر کی تقریب حلف برداری میں جانا چاہتے تھے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب نے سوڈان کے صدر عمر البشیر کو ایران جانے کے لیے سعودی فضائی حدود استعمال کرنے سے روک دیا۔

یہ واقعہ اس وقت پیش جب سوڈانی صدر نو منتخب ایرانی صدر حسن روحانی کی تقریب حلف برداری میں شرکت کے لیے سوڈان سے بذریعہ طیارہ ایران جانا چاہتے تھے، تاہم انہیں اس مقصد کے لیے سعودی فضائی حدود سے گزرنے کے لیے سعودی حکومت کی اجازت درکار تھی۔ سعودی عرب کی طرف روکے جانے کے بعد سوڈان کے صدر کو تہران کی صدارتی تقریب میں دیکھا نہیں گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سوڈان کے صدر عمر البشیر انٹرنیشنل کریمنل کورٹ کو ایک فوجداری مقدمے میں کارروائی کے سلسلے میں مطلوب ہیں۔ اس مقصد کی خاطر آئی سی سی نے سوڈان صدر کی گرفتاری کے وارنٹ جاری کر رکھے ہیں۔ ان پر الزام ہے کہ انہوں نے دارفرکےعلاقے میں مبینہ طور پر جنگی جرائم کا ارتکاب کیا ہے۔ ان کے یہ جرائم نسل کشی اور انسانیت کے خلاف جرائم کے زمرے میں آتے ہیں۔ اس سلسلے میں عمر البشیر کو گرفتار کرنے کے لیے دوالگ الگ وارنٹ بھی جاری کر رکھے ہیں۔

آئی سی سی کی شروع کی گئی اس کارروائی کے بعد عمرالبشیر کا بیرونی دنیا کا سفر محدود ہو کر رہ گیا ہے، البتہ بعض ہمسایہ افریقی ممالک میں ان کی آمد ورفت اس کے باوجود ہوتی رہی ہے۔ اب سوڈاںی صدر ایک اعلی سطح کے بڑے وفد کی قیادت کرتے ہوئے ایران جانے کے خواہش مند تھے مگر سعودی سرکاری خبر رساں ادارے کے مطابق انہیں سعودی فضائی حدود کے راستے ایران جانے کی اجازت نہیں دی گئی ہے اور ان کے طیارے کو سعودی فضا سے گزرنے سے روک دیا گیا۔