یورپی یونین: سفیروں کا مصر کے بارے ہنگامی مشاورتی اجلاس

سینکڑوں مظاہرین کی ہلاکتوں کے بعد معاہدات کا از سر نو جائزہ لیا جائیگا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یورپی یونین نے مصر میں آٹھ سو سے زائد مظاہرین کی ہلاکتوں کے بعد اپنے سفیروں کو موسم گرما کی تعطیلات کے باوجود ہنگامی مشاورت کے لیے آج پیر کو طلب کر لیا ہے۔ یورپی یونین نے کچھ عرصہ قبل مصر کے لیے چھ اعشاریہ سات ارب ڈالر کی امداد کا اعلان کیا تھا، تاہم یورپی بلاک نے پہلے منتخب صدر مرسی کی برطرفی کے باعث خبردار کیا تھا کہ اس پر نظرثانی بھی ہو سکتی ہے۔

یورپی یونین کے ذرائع کے مطابق اس ہنگامی مشاورت کے لیے بلائے گئے اجلاس میں مصر کے ساتھ معاہدات کا از سر نو جائزہ لیا جا سکتا ہے۔ یہ بھی خدشہ ہے کہ مصر کو قتل و غارت گری کی وجہ سے یورپی یونین کی جانب سے غیر معمولی مضمرات کا سامنا کرنا پڑے۔

یورپی کونسل کے صدر ''ہرمین وین رومپائی'' اور یورپی کمیشن کے صدر'' جوزمینوئل براسو'' نے زور دیا ہے کہ مصری فوج اور عبوری حکومت تشدد سے گریز کرتے ہوئے مکالمے اور جمہوری عمل کی طرف بڑھے۔ دونوں عہدیداروں کے مطابق'' یورپی یونین کی رکن ریاستوں سے مل کر مصر کے ساتھ آئندہ کے تعلقات کا جائزہ لیا جائے گا۔''

انہوں نے مزید کہا کہ'' اپنے عالمی اور علاقائی اتحادیوں کے ہمراہ یورپی یونین پختگی کے ساتھ تشدد کے خاتمے اور سیاسی مذاکرات کے لیے کوشاں رہے گی۔''

ذرائع کے مطابق یورپی ممالک کے سفیروں کی ہنگامی مشاورت امکانی طور پر پیر کے روز مکمل ہو جائے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں