.

ایرانی وزیر خارجہ مغربی ممالک سے جوہری مذاکرات کی قیادت کریں گے

''جوہری دستاویز'' قومی سلامتی کونسل سے وزارت خارجہ کے حوالے کردی گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کے ایک سفارتی عہدے دار کا کہنا ہے کہ نئے وزیرخارجہ محمد جواد ظریف چھے عالمی طاقتوں کے ساتھ جوہری مذاکرات کی قیادت کریں گے.

اس ایرانی عہدے دار نے اپنی شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا ہے کہ ''جوہری دستاویز منگل کو وزارت خارجہ کے حوالے کردی گئی ہے''۔ اعتدال پسند حسن روحانی نےجون میں بطور صدر انتخاب کے بعد عالمی طاقتوں کے ساتھ جوہری تنازعے پر مذاکرات کے عمل میں نمایاں تبدیلیاں لانے کا اعلان کیا تھا۔

قبل ازیں ایران کی قومی سلامی کونسل کے سربراہ اعلیٰ مذاکرات کار کا فریضہ انجام دیتے رہے ہیں اور وہی اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے پانچ مستقل رکن ممالک اور جرمنی کے ساتھ جوہری تنازعے پر مذاکرات کے عمل میں ایرانی ٹیم کی قیادت کرتے رہے ہیں۔

ایرانی عہدے داروں کا کہنا ہے کہ وہ حسن روحانی کے پیش رو صدر محمود احمدی نژاد کی شعلہ بیانی کو بھی ترک کردیں گے اور اس کے بجائے جوہری تنازعے پر مذاکرات میں نرم روی اختیار کریں گے۔

تاہم وہ یہ بھی واضح کرتے رہے ہیں کہ ایران اپنے متنازعہ جوہری پروگرام سے دستبردار نہیں ہوگا اور اس پرعمل درآمد جاری رکھے گا۔ مغربی ممالک ایران پر یہ الزام عاید کرتے چلے آرہے ہیں کہ وہ جوہری بم تیار کرنا چاہتا ہے جبکہ ایران کا کہنا ہے کہ اس کا جوہری پروگرام پُرامن مقاصد کے لیے ہے۔