.

القاعدہ سے تعلق کا الزام: پاکستانی دینی مدرسے پر امریکی پابندیاں عاید

امریکی محکمہ خزانہ کی کسی دینی ادارے پر قدغن لگانے کی منفرد مثال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا نے پاکستان کے شمال مغربی شہر پشاور میں واقع ایک دینی مدرسے پر القاعدہ اور دوسرے جنگجو گروپوں سے تعلق کے الزام میں پابندیاں عاید کردی ہیں۔ دینی تعلیم دینے والے کسی ادارے پر امریکا کی جانب سے پابندیاں عاید کرنے کا یہ منفرد اقدام ہے۔

امریکی محکمہ خزانہ نے منگل کو ایک بیان میں کہا ہے کہ ''پشاور میں واقع جامعہ تعلیم القرآن والحدیث، جو گنج مدرسہ کے نام سے بھی جانا جاتا ہے، پر پابندیاں عاید کردی گئی ہیں اور کسی اسلامی اسکول (مدرسے) کو پہلی مرتبہ اس طرح پابندیوں کا ہدف بنایا گیا ہے''۔

امریکا نے پاکستان کے دوصوبوں سندھ اور بلوچستان میں القاعدہ کے ایک مبینہ لیڈر پربھی پابندیاں عاید کردی ہیں۔ اس اقدام کے تحت اس شخص اور دینی ادارے کے امریکا میں موجود کسی بھی طرح کے اثاثے منجمد کردیے گئے ہیں اور امریکی شہری ان کے ساتھ کوئی کاروبار یا لین دین بھی نہیں کرسکیں گے۔

دوسری جانب گنج مدرسہ کے بانی حاجی عالم شیر نے القاعدہ یا کسی جنگجو گروپ کے ساتھ اپنے ادارے کے کسی قسم کے تعلق کی تردید کی ہے۔