.

مغرب کے ایجنٹ ہمیں جمہوریت کا درس نہ دیں: مصر

"مسلمانوں نے مصر کے ساتھ "برادران یوسف" کا طرز عمل اپنایا"

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصرمیں فوجی کی چھتری تلے قائم عبوری حکومت ترک وزیراعظم رجب طیب ایردوآن کے بیانات پرسخت سیخ پا ہے۔ ترک وزیراعظم نے منتخب صدر ڈاکٹر محمد مرسی کی معزولی کو"کھلی فوجی بغاوت" قرار دیا تھا.

اس بیان کے ردعمل میں عبوری صدر منصورالعدلی کے مشیراطلاعات نے احمد المسلمانی نے طیب ایردوان کو 'مغرب کا ایجنٹ' قرار دیا۔ انہوں نے طیب ایردوآن کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ "مغربی ایجنٹ ہمیں جمہوریت اور قومیت کا درس نہ دیں"۔

کثیرالاشاعت اخبار "المصری الیوم" سے بات کرتے ہوئے مسٹرمسلمانی نے کہا کہ مصرکو توڑنے والے علاقائی اور عالمی ایجنٹ اپنے مذموم مقاصد میں ہرگز کامیاب نہیں ہوں گے۔

قبل ازیں ترک خبر رساں ایجنسی "اناطولیہ" نے وزیراعظم رجب طیب ایردوآن کا ایک بیان جاری کیا تھا جس میں انہوں نے کہ مصر میں منتخب حکومت کا تختہ الٹنے کو صریح فوجی بغاوت قرار دیا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ مصرمیں خونریز فوجی انقلاب کے نتیجے میں بننے والی حکومت نہتے شہریوں کے قتل عام کی ذمہ دار ہے۔

عالم اسلام کو 'برادران یوسف' سے تشبیہ

ترک وزیراعظم نے مصرکے حوالے سے عالم اسلام بالخصوص خلیجی ملکوں کے کردار کو 'شرمناک' قرار دیتے ہوئے کہا کہ مصریوں کے ساتھ ان ملکوں نے وہی سلوک کیا ہے جو حضرت یوسف علیہ السلام کے ساتھ اس کے بھائیوں نے کیا تھا۔ ان کا اشارہ جلیل القدر پیغمبر حضرت یوسف علیہ السلام کے اس مشہور تاریخی واقعے کی جانب تھا جس میں "برادران یوسف" نے اپنے بھائی یوسف کو ایک کنوئیں میں ڈال تھا۔

بعد ازاں اللہ تعالیٰ نے اپنی حکمت کے ذریعے حضرت یوسف کو بچا لیا اور ان کے بھائیوں کو سب کے سامنے ذلیل اور رسوا کیا تھا۔ ترک وزیراعظم کا کہنا ہے کہ مصرکے ساتھ برادران یوسف کا رویہ اپنانے والی مسلمان حکومتیں بھی آخرکار پوری دنیا میں ذلیل و رسوا ہوں گی۔