.

داریل عیسیٰ: لبنانی نژاد امیر ترین امریکی رُکن کانگریس

وائٹ ہاؤس داریل کے طرزعمل سے ناخوش ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا میں جہاں احتساب کا سخت نظام موجود ہے وہیں کانگریس میں بڑی بڑی جائیدادوں کے مالک بھی موجود ہیں۔ ان میں داریل عیسیٰ بھی شامل ہیں، جن کی ایک نمایاں خوبی یہ ہے کہ وہ لبنانی نژاد عرب ہیں اور حکومتی پالیسیوں پر معترض ہونے کے باعث خود بھی ہدف تنقید رہتے ہیں۔

داریل عیسیٰ ریاست کیلیفورنیا سے رکن کانگریس منتخب ہوئے۔ سنہ 2012ء میں ان کے اثاثوں کی مالیت 355 ملین ڈالرسے زیادہ تھی جس پرانہیں کانگریس میں ری پبلیکن پارٹی کے امیر ترین رکن قرار دیا گیا۔ ان کے امریکا کے کئی بڑے بنکوں میں شیئرز ہیں۔ داریل ماضی میں گاڑیوں کے آٹو اسپیئر پارٹس کا کاروبار بھی کرتے رہے ہیں۔

جریدہ "دی ہیل" نے اپنی تازہ رپورٹ میں 50 امیر ترین اراکین کانگریس کی جو فہرست شائع کی ہے، اس میں بھی داریل نے امیر ترین رکن کانگریس کا اعزاز برقرار رکھا ہے۔

ری پبلیکن پارٹی سے وابستہ داریل عیسیٰ وائیٹ ہاؤس کی خارجہ اور دفاعی پالیسیوں سے اکثر شاکی رہتے ہیں۔ وائیٹ ہاؤس کا ان کے ساتھ رویہ بھی ہمیشہ ناقدانہ ہے۔ اس وقت وہ ایگزیکٹو اتھارٹی کی نگراں کمیٹی کے چیئرمین ہیں۔ صدر براک اوباما کی انتظامیہ نے داریل پر پیشہ وارنہ امور کی انجام دہی میں لاپرواہی اور کوتاہی کا بھی الزام عائد کیا ہے۔ ان پرایک الزام یہ بھی لگایا گیا کہ ستمبر2012ء میں لیبیا میں امریکی سفارت خانے پرشدت پسندوں کے حملے کی معلومات کو داریل نے خلط ملط کرنے کی کوشش کی تھی۔

"دی ہیل" کی رپورٹ کے مطابق کانگریس کے ری پبلیکن پارٹی سے تعلق رکھنے والے29 امیر ترین ارکان میں سے ایسا کوئی بھی نہیں جسے پارٹی سنہ 2016ء کے صدارتی انتخابات کی دوڑ میں شامل کرنا چاہتی ہو۔