.

امریکا، مصر میں افراتفری کی حمایت سے باز رہے: شیخ الازھر

"ہمارا ملک نازک دور سے گذر رہا ہے"

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کی نامور علمی درسگاہ جامعہ الازھر کے سربراہ ڈاکٹر احمد الطیب نے امریکا پر زور دیا ہے کہ وہ مصرمیں افراتفری کی حمایت سے گریز کرے۔ شیخ الازھر کا کہنا ہے کہ مصرایک نازک دور سے گذر رہا ہے، عالمی برادری کو اس نزاکت کا احساس کرنا چاہیے۔

شیخ الازھرنے ان خیالات کا اظہار اقوام متحدہ سیکرٹری جنرل بان کی مون کے خصوصی معاون برائے سیاسی امور جیفری فلٹمن سے ملاقات میں کیا۔ ڈاکٹر احمد الطیب نے مصرکی موجودہ صورت حال میں امریکا اور بعض دوسرے ملکوں کی تنقید پر ناراضگی کا اظہار کیا۔

انہوں نے کہا کہ ہم اس وقت ایک نازک دور سے گذر رہے ہیں۔ مصرکی موجودہ عبوری حکومت عوامی منشاء کے تحت جمہوری روڈ میپ کو عملی شکل دینے کے لیے کوشاں ہے۔ ایسے حالات میں امریکا کو ہماری امداد بند کرکے افراتفری کی حمایت نہیں کرنی چاہیے۔ ملاقات میں وزیر اوقاف و مذہبی امور محمد مختار جمعہ اور جامعہ الازھر کے سیکرٹری الشیخ عبدالتواب قطب بھی موجود تھے۔

اس موقع پر مسٹر جیفری فلٹمن کا کہنا تھا کہ اقوام متحدہ اس بات پر یقین رکھتا ہے کہ مصر کے موجودہ حالات کو خود مصری عوام ہی بہتر کرسکتے ہیں، البتہ عالمی برادری کے لیے پریشانی سڑکوں پر ہونے والے پرتشدد واقعات اور بے گناہ شہریوں پر اسلحے کا بے دریغ استعمال ہے۔ انہوں نے مصری سیاست اور قومی معاملات میں جامعہ الازھر کے کردار کو تسلیم کیا اور کہا کہ ڈاکٹر احمد الطیب کی سربراہی میں جامعہ الازھر قومی مفاہمت کا عمل آگے بڑھانے کے لیے موثر کردار ادا کرسکتی ہے۔