.

"رو پڑا وہ شخص مجھ کو حوصلہ دیتے ہوئے"

ترک وزیراعظم اخوانی رہ نما کی صاحبزادی پر نظم سن کر آبدیدہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر میں مسلح فورسز کے عتاب کا شکار جماعت اخوان المسلمون کے سنئیر رہ نما محمد البالتاجی کی اپنی بیٹی کی اندوہناک موت پر لکھی گئی نظم سننے کے بعد ترک وزیراعظم رجب طیب ایردوآن آبدیدہ ہوگئے۔

رجب طیب ایردوآن بہت رقیق القلب شخصیت ہیں۔ انھوں نے جب سترہ سالہ اسماء البالتاجی سے متعلق نظم سنی تو وہ آنسوؤں سے رونا شروع ہوگئے اور انھیں ٹیلی ویژن پر روتے ہوئے دیکھا جاسکتا تھا۔ اس نظم کو سننے کے بعد جب ان کا انٹرویو کیا گیا تو وہ بول نہیں سکے۔ اسماء البالتاجی قاہرہ کے رابعہ العدویہ اسکوائر میں دھرنا دینے والے جمہوریت پسند کارکنان کے خلاف مصری سکیورٹی فورسز کی کارروائی کے دوران جاں بحق ہوگئی تھیں۔

ترک وزیراعظم نے کہا کہ ''ایک مرتبہ مجھے میری بیٹی نے کہا کہ میں گھر میں ایک رات اس کے پاس رہوں لیکن میں بہت مصروف تھا اور اس کے لیے وقت نہیں نکال سکتا تھا۔ میں بالتاجی کے خط میں اپنے بچوں کو دیکھتا ہوں''۔

واضح رہے کہ ایردوآن 2010ء میں غزہ میں اسرائیلی حملے میں فلسطینی بچوں کی شہادتوں پر کیمرے کے سامنے رو دیے تھے۔ ان کی اہلیہ ایمن ایردوآن نے 2012ء میں جب میانمر کی مغربی ریاست راکھین کا دورہ کیا تھا تو وہ وہاں روہن گیا مسلمانوں پر بدھ متوں کے مظالم کو دیکھ کر آبدیدہ ہوگئی تھیں۔

ترک وزیراعظم نے مصر کی مسلح افواج کے ہاتھوں منتخب جمہوری صدر محمد مرسی کی برطرفی کے اقدام پر کڑی نکتہ چینی کی تھی اور وہ سابق صدر کی جماعت اخوان المسلمون کی بھرپور حمایت کررہے ہیں اور انھوں نے سعودی عرب اور بعض دوسرے مسلم ممالک کے برعکس مصر میں فوجی انقلاب اور فوج کی اخوان کے خلاف کارروائی کی حمایت سے انکار کردیا ہے۔