سعودی عرب کے لیے ایشین فٹبال کپ فائنل کی میزبانی مشکل

محرم کے بغیر خواتین کو مملکت آنے کی اجازت نہیں ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

محرم کے بغیر خواتین کو سعودی عرب آنے کی عدم اجازت کی پالیسی کے باعث 2019 کے ایشین کپ کے فائنل کی میزبانی مملکت کے لیے مشکل ہو گئی ہے۔ یہ بات ایشین فٹبال کنفیڈریشن کے حکام کے حوالے سے میڈیا رپورٹس میں بتائی گئی ہے۔

میڈیا رپورٹس میں کہا گیا ہے کہ یہ ایک اہم مسئلہ ہو گا کہ خواتین کھلاڑی سعودی عرب میں ایشین کپ کے فائنل میں حصہ لینے کے لیے آ سکیں۔ کیونکہ سٹیڈیم آنے کی خواہش مند مختلف ٹیموں کی حامی خواتین کے لیے بھی یہ شرط لازمی ہو گی کہ ان کے ساتھ ان کے محرم موجود ہوں۔
حالانکہ مختلف ممالک کی ٹیموں نے کھیلوں کے حوالے سے ایسی کمپنیوں کی خدمات حاصل کر رکھی ہیں جن میں خواتین کی بھی معقول تعداد شامل ہے۔

اب تک کی اطلاعات کے مطابق گیارہ ممالک نے ایشین کپ کے فائنل کی میزبانی کرنے کی خواہش ظاہر کی ہے، تاہم ان میں سے تین ملک لبنان، ملائیشیا اور میانمار دوڑ سے نکل گئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں