مصر میں قومی مفاہمت زور دیتے رہیں گے: امریکی وزیر دفاع

"ہلاکتوں، فوجی امداد کی بندش، دونوں کیخلاف ہوں"

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکا، مصر میں جاری بحران کے سیاسی حل اور قومی مفاہمت پر زور دیتا رہے گا تاکہ مصر کو دوبارہ معاشی ترقی کے راستے پر واپس لا یا جا سکے۔ یہ بات امریکی وزیر دفاع چک ہیگل نے ایک عالمی نشریاتی ادارے کو دیے گئے تازہ انٹرویو میں کہی ہے۔ امریکی وزیر دفاع نے مصر کی امداد میں کمی کو ناپسند کرتے ہوئے کہا ہے کہ مصر سے ہماری مضبوط شراکت داری ہے اور مصر نے ہمیشہ ذمہ دارانہ انداز کیا ہے۔

امریکی وزیر دفاع چک ہیگل نے کہا ''مصر کی عبوری حکومت کو واپس مفاہمت کے راستے پرآنا ہو گا کیونکہ اسی صورت مصر اقتصادی اور جمہوری اصلاحات کے راستے پر آسکے گا۔

چک ہیگل نے معزول کیے گئے صدر مرسی کے حامیوں کے دھرنے پر مصری فوج کی طرف سے کیے گئے کریک ڈاون کے اور فائرنگ کی مذمت کی جس کے نتیجے میں سینکڑوں مظاہرین مارے گئے تھے۔

ان کا کہنا تھا کہ''میں مصر کی فوجی امداد بند کرنے کے مخالف ہیں۔ ''چک ہیگل نے استفہامیہ انداز میں کہا '' کیا آپ سمجھتے ہیں کہ ساری امداد روک دینا بہتر ہو سکتا ہے ؟ '' لیکن ساتھ ہی امریکی وزیر دفاع نے اس امکان کو مسترد نہیں کیا کہ وقتا فوقتا اور وقفے وقفے سے مصر کے لیے ایک اعشاریہ تین ارب ڈالر کی سالانہ فوجی امداد میں رکاوٹ آ سکتی ہے ۔

انہوں نے کہا مصر ہمیشہ سے امریکا کا ایک ذمہ دار شراکت دار رہا ہے۔ مصر نے خاص طور پر 1979 میں خطے کو جنگ کی لپیٹ میں جانے سے روکنے کے لیے اہم کردار ادا کیا تھا۔ مسٹر ہیگل نے کہا '' لازمی نہیں کہ امریکا آمرانہ حکومت سے متفق ہو لیکن ہم مصر ایسے ایک بڑے اور خطے کے اہم ملک سے تعلقات میں رخنہ بھی نہیں ڈالنا چاہتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں