شام کیخلاف کارروائی، پہلے کانگریس سے منظوری چاہوں گا: اوباما

کیمائی ہتھیاروں سے شام میں ہلاکتیں صدی کا بد ترین کیمیائی قتل عام ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکا کے صدر باراک اوباما نے شام کی صورت حال پر امریکی شہریوں کو اعتماد میں لیتے ہوئے کہا ہے کہ ''امریکا کو شامی رجیم کے خلاف فوجی کارروائی کرنا چاہیے۔'' انہوں نے اس بارے میں وضاحت کرتے ہوئے کہا ''میں اس سلسلے میں پہلے کانگریس کی منظوری چاہوں گا۔''

صدر اوباما نے شام مین کیمیائی ہتھیاروں سے 21 اگست کو ہونے والی ہلاکتوں کوکیمیائی ہتھیاروں سے ہونے والا صدی کا بد ترین قتل عام قرار دیا اور کہا ''یہ انسانی عظمت پر حملہ تھا۔'' اس لیے امریکا کی یہ ذمہ داری تھی کہ کیمیائی ہتھیاروں کے خلاف بین الاقوامی سطح پر اتفاق رائے پیدا کرے۔''

امریکی صدر نے کہا وہ چاہتے تھے کہ وہ اقوام متحدہ کے مینڈیٹ کے بغیر ہی کارروائی کریں کہ اقوام متحدہ عملا مفلوج پڑی ہے۔ اب شام پر فوجی کارروائی کرنے یا نہ کرنے کے سوال پر 9 ستمبر کو کانگیس کا اجلاس بلایا گیا ہے۔ صدر اوباما نے امریکی قوم کو اعتماد میں لینے کی کوشش کے دوران یہ اشارہ نہیں دیا کہ شام پر فوجی کارروائی ایک روز بعد ہو گا، ایک ہفتے بعد یا ایک مہینے بعد ہو گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں