.

بھارت کے مذہبی پیشوا پر نو عمر لڑکی سے دست درازی کا الزام

'باپو' کے پاپ کے خلاف بھارت میں مظاہرے کئے جا رہے ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بھارت کے ایک متنازعہ روحانی گرو کو پولیس نے ایک لڑکی کی جانب سے عصمت دری کے الزامات کے بعد گرفتار کرلیا ہے۔ بھارت کے طول و عرض میں مظاہروں کے بعد اسارام باپو کی گرفتاری عمل میں لائی گئی۔

پولیس کے اعلی عہدیدار اجے سنگھ لامبہ نے کہا ہے کہ اسارام باپو کو اتوار کے روز گرفتار کرکے جے پور لایا گیا ہے، جہاں پولیس کے مطابق ان پر ایک سولہ سال کی لڑکی کو ریپ کرنے کا الزام ہے۔

لڑکی نے شکایت دو ہفتے قبل درج کروائی تھی جس میں کہا گیا تھا کہ ہندو مذہبی رہنما نے اسے جودھپور میں زیادتی کا نشانہ بنایا۔

بھاری میں ہزاروں پیروکاروں کے لئے فرشتہ سیرت مذہبی پیشوا اسارام باپو نے ان الزامات کی تردید کی ہے. اسارام باپو ہندو مذہب کے بارے میں اپنی جذباتی تقاریر کے حوالے سے ملک بھر میں جانے جاتے ہیں۔

یاد رہے کہ 'باپو' نے اس وقت ہزاروں بھارتی کو مشتعل کردیا جب انہوں نے دہلی گینگ ریپ کی شکار ہونے والی لڑکی کے بارے میں کہا تھا کہ اسے اپنے حملہ آوروں کو بھائی کہنا چاہئے تھا اور ان سے چھوڑ دینے کی درخواست کرنی چاہئے تھی۔