.

عالمی شہرت یافتہ انٹرویور اور ناشر سر ڈیوڈ فراسٹ چل بسے

بحری جہاز پر تقریب میں شرکت کے دوران حرکت قلب بند ہوگئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

برطانیہ کے معروف صحافی، انٹرویور، پیش کار، لکھاری ناشر، کامیڈین اور ٹی وی گیم شو کے میزبان ڈیوڈ فراسٹ دل کا دورہ پڑنے سے چل بسے ہیں۔ ان کی عمر چوہتر برس تھی.

ڈیوڈ فراسٹ 31 اگست کو اپنی موت سے چندے قبل بحری جہاز کوئن الزبتھ منعقدہ تقریب میں شریک تھے جہاں انھیں دل کا دورہ پڑا اور وہ جان لیوا ثابت ہوا۔ انھوں نے سوگواروں میں بیوہ کیرینا اور تین بیٹے چھوڑے ہیں۔

سرڈیوڈ فراسٹ نے 1977ء میں سابق امریکی صدر رچرڈ نکسن کے مشہور انٹرویو سے عالمگیر شہرت پائی تھی اور اس انٹرویو کو صحافتی تاریخ کے بہترین انٹرویوز میں سے ایک قرار دیا جاتا ہے۔

رچرڈ نکسن کو 1974ء میں واٹر گیٹ اسکینڈل کے بعد مواخذے کے خوف سے بے آبرو ہو کر وائٹ ہاؤس سے نکلنا پڑا تھا۔ اس کے بعد وہ معاشی طور پر کنگال ہوگئے تھے اور انھوں نے رقم کے بدلے میں ڈیوڈ فراسٹ کو انٹرویو دینے پر آمادگی ظاہر کی تھی۔

فراسٹ نے اس انٹرویو کے دوران اپنے تیکھے، نوکیلے سوالوں سے رچرڈ نکسن کو پچھاڑ دیا تھا۔ امریکی صدر نے واٹرگیٹ اسکینڈل میں ملوث ہونے کا دفاع کیا اور اس عمل میں ان کی زبان سے یہ لافانی جملہ بھی نکل گیا تھا: ''بہتر، جب امریکی صدر یہ کام کرتا ہے تو اس کا یہ مطلب ہے کہ یہ غیر قانونی نہیں ہے''۔ اگرچہ بعد میں انھوں نے اعتراف کیا تھا کہ انھوں نے ملک کو نیچا دکھا دیا تھا لیکن تب تک بہت تاخیر ہوچکی تھی۔

رابرٹ فراسٹ نے نصف صدی کو محیط اپنے صحافتی کیرئیر کے دوران سیاست، مذہب اور فن وثقافت سے تعلق رکھنے والی بیسیوں نمایاں عالمی شخصیات کے انٹرویوز کیے تھے۔ انھوں نے مشرق وسطیٰ کی جن سرکردہ شخصیات کے انٹرویو کیے، ان میں سابق شاہ ایران رضا شاہ پہلوی، اردن کے مرحوم شاہ حسین اور فلسطین کے لیجنڈ رہ نما یاسرعرفات مرحوم کی اہلیہ سوہا عرفات شامل ہیں۔

انھوں نے متعدد ٹی وی پروگرام پیش کیے اور کم وبیش ٹیلی ویژن کے تمام ہی ایوارڈز اور اعزازات حاصل کیے۔ وہ 2006ء سے 2012ء تک الجزیرہ انگلش پر ''فراسٹ اوور دا ورلڈ'' کے نام سے پروگرام کرتے رہے تھے۔ اس میں انھوں نے سابق برطانوی وزیراعظم ٹونی بلئیر، پاکستانی سیاست دان عمران خان، اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل بین کی مون، جنوبی افریقہ کے مذہبی رہ نما نوبل امن انعام یافتہ ڈیسمنڈ ٹوٹو سمیت مختلف عالمی شخصیات کے انٹرویوز کیے تھے۔