.

فلسطینی جہاز پر"ناکام حملے" کے بعد نہر سوئیز کی سیکیورٹی میں اضافہ

مبینہ حملے کے باوجود اہم بحری روٹ پر ٹریفک معمول کے مطابق جاری رہی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر میں نہر سوئیز کے اندر کنٹینر لیجانے والے بحری جہاز پر ہفتے کے روز 'دہشت گردی کے ناکام حملے' کے بعد مصری فوج نے اس اہم بحری اسٹرٹیجک روٹ کی سیکیورٹی بڑھا دی ہے.

نہر سوئیز اتھارٹی کے سربراہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ "دہشتگرد عناصر" نے فلسطین کے ملکیتی بحری جہاز پرحملہ کیا جو بری طرح ناکام رہا۔ خبر رساں ادارے 'اے ایف پی' کے مطابق حملے سے جہاز اور نہ اس پر لدے کنٹینرز کو کوئی نقصان پہنچا۔

نہر سوئیز میں ہفتے کے روز پینتالیس جہازوں کی نقل و حرکت معمول کے مطابق رہی، اے ایف پی کے مطابق اتوار کے اس اہم بحری روٹ سے پچپن جہاز مزید گذرنے کی توقع ہے.

گذشتہ روز پیش آنے والے واقعے کی تفصیلات اتھارٹی کے بیان میں نہیں بتائی گئی تاہم صرف اتنا بتایا گیا ہے کہ نہر سوئیز سے گذرنے والے کینٹنر جہاز میں زوردار دھماکوں کی آوازیں سنی گئیں.

یاد رہے کہ ہفتے کے روز عراق اور شام میں سرگرم القاعدہ کے ایک گروہ نے مصری عوام کو مسلح افواج کے خلاف ہتھیار بند ہونے کا مطالبہ کیا تھا۔

مصری فوج نے نہر سوئیز کے اردگرد شمالی جزیرہ نما سینا میں سرگرم متعدد انتہا پسند اسلامی تنظیموں کے خلاف آپریشن شروع کر رکھا ہے.