اوباما گروپ 20 کے سربراہی اجلاس کے لیے ماسکو پہنچ گئے

شام کے خلاف فوجی کارروائی کیلیے عالمی حمایت حاصل کریں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکی صدر اوباما ''گروپ بیس'' کے سربراہی اجلاس میں شرکت کے لیے روس کے شہر سینٹ پیٹرز برگ پہنچ گئے ہیں۔ یہاں ان کی عالمی قیادت سے ملاقاتیں ہوں گی، تاہم روس کے صدر ولادی میر پیوٹن کے ساتھ طے شدہ ''ون آن ون '' ملاقات امریکا یکطرفہ طور پر منسوخ کر چکا ہے، جس پر روسی صدر نے دوراز پہلے افسوس کا اظہار کیا تھا۔

امریکی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ صدر اوباما اور ولادی میر کانفرنس کے علاوہ انفرادی سطح پر گفتگو کریں گے۔ گروپ بیس میں عام طور پر معاشی امور پر غور کیا جاتا ہے لیکن اس اجلاس کے موقع پر شام کا معاملہ بھی موضوع بن سکتا ہے، خصوصا شام میں مبینہ طور پر کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کے بعد ممکنہ امریکی کارروائی پر سربراہوں کے درمیان بات چیت ہو گی۔

امریکی سربراہ اس موقع سے فائدہ اٹھا کر شام میں فوجی کارروائی کے لیے حمایت حاصل کرنے کی کوشش کریں گے، تاکہ بشارالاسد کو کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال سزا دی جا سکے۔ اس اہم عالمی موضوع پر امریکا اور روس دونوں کے درمیان شدید اختلاف رائے ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں