.

صومالیہ: ریستوران پر بموں سے حملہ،18 ہلاک

جنگجو گروپ الشباب نے ٹوئٹر کے ذریعے ذمہ داری قبول کر لی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

صومالیہ کے دارالحکومت موغادیشو کے قریب جنگجووں نے ایک ریستوران پر بم حملہ کربکے کم از کم 15 افراد کو ہلاک اور تقریبا دو درجن افراد کو زخمی کر دیا ہے۔ ایک سال کے عرصے کے دوران یہ اس نوعیت کا دوسرا حملہ ہے۔

ایک سرکاری ذمہ دار کے مطابق جنگجووں نے یکے بعد دیگرے دو بم دھماکے کیے۔ دھماکے اس قدر شدید تھے کہ ریستوران کی چھت اڑ گئی۔

پولیس افسر کیپٹن علی حسین کا کہنا ہے کہ مرنے والوں کی تعداد 18 ہے۔ ابتدائی اطلاعات کے مطابق ایک بم دھماکہ ہوا اور ایک خود کش بمبار ریستوران پر حملہ کیا ۔ عینی شاہدین کے مطابق زخمی مدد کے لیےچیخ پکار کر رہے تھے جبکہ مرنے والوں کے جسم بری طرح جلے ہوئے تھے۔

اس موقع پر سکیورٹی اہکاروں نے بھی ہوائی فائر کیے۔ موقع پر موجود عینی شاہدوں نے اس واقعے کی مذمت کی اورکہا امن دشمن عناصر نہیں چاہتے کہ یہاں امن رہے۔ ایک بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق دھماکوں کی ذمہ داری الشباب نامی گروپ نے اپنے ٹوئٹر پیغام کے ذریعے قبول کر لی ہے۔ اس سے پہلے بھی یہ گروپ اسی جگہ ایک کارروائی کر چکا ہے۔