.

مسلم فٹ بالرکی ریال میڈرڈ سے علاحدگی میں کوئی کردار نہیں: مس وینزویلا

''عیدا یسپیکا کے ساتھ تعلقات سے مسعود اوزل کی کارکردگی متاثر ہوئی''

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

براعظم جنوبی امریکا کے ملک وینزویلا کی سابق ملکہ حسن کا کہنا ہے کہ ترک نژاد جرمن فٹ بالر مسعود اوزل کی ریال میڈرڈ سے علاحدگی سے ان کا کوئی تعلق نہیں ہے۔

دوسری جانب ریال میڈرڈ کے چئیرمین فلورینٹینو پیریز کا کہنا ہے کہ اوزل کی مس وینزویلا کے ساتھ حد سے بڑھی ہوئی دوستی سے مسعود کی کھیل کے میدان میں کارکردگی متاثر ہوئی ہے۔ اس لیے انھیں پانچ کروڑ یورو منتقلی فیس کے بدلے میں برطانیہ جانے کی اجازت دے دی گئی ہے۔

لیکن یسپیکا نے ایک اطالوی ویب سائٹ ''سپورٹ میڈیا سیٹ'' کے ساتھ انٹرویو میں کہا ہے کہ ان کے اوزل کے ساتھ تعلقات دیرینہ ہیں اور ان کا اوزل کی ریال میڈرڈ سے علاحدگی سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

انھوں نے کہا کہ "میری دو سال قبل مسعود اوزل سے ملاقات ہوئی تھی۔ اس سے پہلے میڈرڈ میں ایک کلب میں ہم ملے تھے۔ پھر وہ میلان آئے۔ میرا ان کے ریال میڈرڈ سے الگ ہونے سے کسی بھی طرح کا کوئی تعلق نہیں ہے''۔

یسپیکا اس وقت مالیبو کیلی فورنیا میں اپنے دوست برطانوی ماہر معیشت راجر جینکس کے ساتھ رہ رہی ہیں۔ ہسپانوی میڈیا کی اطلاع کے مطابق مسعود اوزل ہر چند ہفتے کے بعد 23 ہزار ڈالرز خرچ کرکے ایک نجی طیارے کے ذریعے یسپیکا سے ملنے جایا کرتے تھے۔ اس حسن کی دیوی کے ساتھ حد سے بڑا ہوا رومانس ہی انھیں لے ڈوباہے اور ریال میڈرڈ نے انھیں فارغ کرنے میں عافیت جانی ہے۔

تاہم مس وینزویلا نے اس بات کا اعتراف کیا ہے کہ میڈرڈ میں ملاقات کے بعد ہم نے فون نمبرز کا تبادلہ کیا تھا اور پھر ایک رات ہم نے میلان میں ایک کلب میں کھانا کھایا اور ملاقات کی تھی لیکن وہ کوئی غیر معروف جگہ نہیں تھی بلکہ وہاں تو ہر وقت فوٹو گرافروں کا جمگھٹا لگا رہتا ہے۔

اوزل کے والد مصطفیٰ اوزل نے ریال میڈرڈ کے چئیرمین پیریزکے خلاف غلط بیان بازی پر قانونی چارہ جوئی کرنے کا اعلان کیا ہے اور کہا ہے انھوں نے میرے بیٹے کے خلاف عورتوں کا رسیا ہونے کا غلط الزام عاید کیا ہے۔ ڈیلی میل کے مطابق انھوں نے کہا کہ ''پیریز کوئی معزز شخص نہیں ہیں۔ ہوسکتا ہے ان کے پاس بہت زیادہ دولت ہو لیکن وہ اس سے وہ معزز نہیں بن سکتے''۔