مراکشی وزیر پر ملکی خزانے کو ایک ملین ڈالر نقصان پہنچانے کا الزام

وزیر اطلاعات کے خلاف "استقلال" پارٹی کے الزامات مسترد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

شمالی افریقا کے ملک مراکش میں حکومت اوراپوزیشن کی سب سے بڑی جماعت "الاستقلال" کے درمیان وزیراطلاعات پر الزام تراشی کا معاملہ زیادہ شدت اختیار کرگیا ہے۔ اپوزیشن جماعت نے ایک مرتبہ پھر الزام عائد کیا ہے کہ وزیر اطلاعات اور حکومتی ترجمان مصطفیٰ الخلفی تین منٹ کے ایک بیان میں قومی خزانے کو ایک ملین امریکی ڈالرکا نقصان پہنچا چکے ہیں، جبکہ حکومت نے یہ الزامات یکسر مسترد کردیے ہیں۔

رباط میں وزارت پبلک افیئرز وحسن انتظام کے ایک عہدیدار نے "العربیہ ڈاٹ نیٹ" سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراطلاعات مصطفیٰ خلفی کا بھرپور دفاع اور استقلال پارٹی کو آڑے ہاتھوں لیا ہے۔ حکومتی عہدیدار نے کہا کہ وزیراطلاعات نے ایسا کوئی بیان جاری نہیں کیا ہے جو قومی خزانے کو ایک ملین ڈالر نقصان پہنچانے کا باعث بنا ہو۔ استقلال پارٹی اپنی ناکامیاں چھپانے کے لیے اس طرح کے بھونڈے الزام عائد کرکے حکومت کو بدنام کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اپوزیشن جماعت نے مصطفیٰ خلفی کے بیان کے نتیجے میں قومی خزانے کو پہنچنے والے نقصان کے جو اعداد و شمار جاری کیے ہیں وہ قطعی بے بنیاد اور غلط معلومات پر مبنی ہیں۔ وزیر داخلہ کے بیان سے مراکش اور عالمی انشورنس کمپنیوں کے درمیان مذاکرات پر کوئی اثر نہیں پڑا ہے اور نہ ہی ملک کو کوئی مالی نقصان پہنچا ہے۔

خیال رہے کہ اپوزیشن جماعت کی جانب سے ایک آڈیو ٹیپ بطور ثبوت پیش کی گئی ہے جس میں پبلک افیئر کے وزیرمملکت کو پارلیمانی کمیٹی کے دوران یہ کہتے سنا گیا ہے کہ وزیراطلاعات نے ملک میں تیل کی قیمتوں کو عالمی منڈی سے ہم آہنگ کرنے کی خاطر پیمائشی نظام لاگو کرنے کی تجویز دی تھی۔ اس تجویز کے بعد حکومت اور تیل کی عالمی انشورنس کمپنیوں کے درمیان مذاکرات تعطل کا شکار ہوگئے تھے جو قومی خزانے کو ایک ملین ڈالرز کا خسارے کا باعث بنے ہیں۔

دوسری جانب وزارت برائے عمومی امور کی جانب سے اس آڈیو ٹیپ کو جعلی قرار دے کرمسترد کردیا گیا ہے اور کہا ہے کہ وزیرموصوف نے کسی پارلیمانی کمیٹی میں اس نوعیت کا کوئی بیان نہیں دیا ہے۔ اس طرح کی جعلی ٹیپ ریکارڈنگ استقلال پارٹی کی جانب سے حکومت کو بدنام کرنے کے لیے تیار کی جاتی رہتی ہیں۔

معاملے کی مزید وضاحت کے لیے العربیہ ڈاٹ نیٹ نے براہ راست وزیر اطلاعات مصطفیٰ خلفی سے بھی ٹیلیفون پر بات کی۔ انہوں نے بھی استقلال پارٹی کی جانب سے عائد تمام الزامات بے بنیاد قرار دیے۔ تاہم انہوں نے کہا کہ تیل کی قیمتوں کو عالمی منڈی کے ہم آہنگ کرنے کے لیے پیمائشی نظام لاگو کرنے کی تجویز مثبت ہے اورحکومت نے اس پرعمل درآمد کا بھی فیصلہ کیا ہے۔ اگر میری اس تجویز سےقومی خزانے کو نقصان پہنچتا تو اس پر عمل درآمد کیوں کیا جاتا۔

وزیراطلاعات کا کہنا تھا کہ استقلال پارٹی حکومت کی معاشی ترقی کو ٹھنڈے پیٹوں برداشت نہیں کر رہی ہے۔ میرے بیان سے رباط اور بین الاقوامی انشورنس کمپنیوں کے درمیان بات چیت متاثر نہیں ہوگی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں