اہلِ مکہ حجاج کی خدمت گزاری اپنا فریضہ جانیں:شہزادہ خالد الفیصل

سعودی قیادت مکہ کی تعمیر وترقی کے لیے یکسو ہوکر اقدامات کررہی ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

مکہ مکرمہ کے علاقے کے امیر (گورنر) شہزادہ خالد الفیصل نے اہل مکہ پر زوردیا ہے کہ وہ اللہ کے مہمانوں کی خدمت گزاری کو اپنا فخریہ فریضہ جانیں۔

انھوں نے یہ بات بدھ کو الحرمین الشریفین کے امور کی صدارتی مہم کے افتتاح کے موقع پر کہی ہے۔انھوں نے کہا کہ سعودی عرب کی قیادت اس وقت مکہ کی تعمیر وترقی کے لیے مکمل طور پر یکسو ہو کر اقدامات کررہی ہے اور وہ حجاج کرام کے لیے تمام سہولتوں اور خدمات کو یقینی بنا رہی ہے۔

شہزادہ سعود الفیصل نے کہا کہ ''سعودی عرب کی حکومت اور عوام حجاج کرام کی خدمت کو اپنے لیے ایک بڑا اعزاز اور اپنے اوپر بڑا اعتماد سمجھتے ہیں،اس لیے سعودی مملکت کی ترقی اور تزویراتی منصوبہ بندی میں حجاج کی خدمت کو اولین ترجیح حاصل ہے''۔

شہزادہ خالد نے،جوسعودی عرب کی مرکزی حج کمیٹی کے چئیرمین بھی ہیں،بتایا کہ انھوں نے اعلیٰ تعلیم کے وزیر کو تجویز پیش کی ہے کہ مکہ مکرمہ میں ''جامعہ حج اور عمرہ'' کے نام سے ایک یونیورسٹی قائم کریں۔اس میں حج اور عمرے سے متعلق جامع تعلیم دی جائے اور تحقیق کی جائے۔

امیرمکہ نے حج مہم کے سلسلہ میں ایک ویڈیو بھی ملاحظہ کی۔اس کا عنوان:''حجاج کی خدمت ہمارے لیے اعزازِ افتخار''۔انھوں نے اس سال کے حج سے متعلق بعض دوسری سرگرمیوں کا بھی افتتاح کیا۔ان میں ایک نمائش ،ورکشاپ ،لیکچرز شامل تھے۔ان کا عنوان:''حج:ایک عبادت اور مہذب رویہ تھا''۔

انھوں نے نمائش کے مختلف پویلینز کا دورہ کیا۔ان میں صدارت اور حج کے مختلف محکموں کی جانب سے مہیا کی جانے والی مختلف خدمات کی نشان دہی کی گئی تھی۔

اس موقع پر صدارت کے صدر اور مسجد الحرام کے امام اور خطیب شیخ عبدالرحمان السدیس ،صدارت کے نائب سربراہ شیخ محمد الخزیم اور دوسرے متعدد عہدے دار اور علمائے دین بھی موجود تھے۔

درایں اثناء معلوم ہوا ہے کہ بلدیاتی اور دیہی امور کے وزیر منصور بن متعب ہفتے کے روز تمام مقدس مقامات کا دورہ کریں گے اور حج کی حتمی تیاریوں کا جائزہ لیں گے۔وہ مقدس مقامات میں زیرتکمیل متعدد ترقیاتی منصوبوں کا افتتاح بھی کریں گے۔

سعودی عرب کے ڈائریکٹر جنرل پاسپورٹس لیفٹیننٹ جنرل سالم البلیہد کے فراہم کردہ اعداد وشمار کے مطابق منگل تک حج کے لیے 854424 عازمین بیرون ملک سے سعودی عرب پہنچ چکے تھے۔ان میں 814350 فضائی سفر کے ذریعے ،29400 زمینی راستے سے اور 10652 سمندری راستے سے پہنچے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں