نیٹو فضائی حملہ، تین بچوں سمیت پانچ افغانی ہلاک

چھ ماہ میں ایک ہزار سے زائد افغان مارے گئے، دوہزار زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

نیٹو فورسز کے ایک فضائی حملے کے دوران تین بچوں سمیت کم از کم پانچ افغان شہری جاں بحق ہو گئے ہیں۔ یہ فضائی حملہ افغانستان کے مشرقی حصے جلال آباد شہر کے قریب کیا گیا ہے۔ مقامی لوگوں نے نیٹو فورسز کے ہاتھوں ان ہلاکتوں پر امریکا کے خلاف مرگ بر نعرے لگائے۔

تفصیلات کے مطابق افغانستان کے صوبہ ننگر ہار کے دارالحکومت جلال آباد کے نزدیک کیے گئے نیٹو حملے کے بعد نیٹو فورسز کے ترجمان کا کہنا تھا'' یہ فضائی حملہ نیٹو اور افغان فورسز نے اس علاقے سے ایک کارروائی کے جواب میں کیا ہے۔'' ترجمان کے مطابق'' ابتدائی طور پر ملنے والی اطلاعات کے مطابق کسی عام شہری کی ہلاکت نہیں ہوئی ہے۔''

واضح رہے یہ حملہ جمعہ اور ہفتہ کی درمیانی شب کیا گیا تھا۔ صوبائی محکمہ تعلیم کے ترجمان کے مطابق جاں بحق ہونے والوں میں سکول کے تین طالبعلم بھی شامل تھے۔

واضح رہے گزشتہ ماہ نیٹو فورسز کی ایک ایسی ہی کارروائی کے دوران صوبہ کنہر میں عورتوں اور بچوں سمیت 16 شہری جاں بحق ہو گئے تھے۔

دریں اثناء ہفتے کے روز صوبہ فرح میں سڑک کنارے ہونے والے ایک دھماکے میں بھی تین افغان ہلاک ہوئے ہیں، تاہم اس دھماکے کی کسی نے ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔

اقوام متحدہ کی ایک رپورٹ کے مطابق رواں سال کی پہلی ششماہی میں ایک ہزار سے زائد افغانی ہلاک اور دو ہزار سے زائد اسی طرح کے مختلف واقعا ت میں زخمی ہو چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں