''ڈرگ لارڈ فارما سیوٹیکل کا انتظامی سربراہ؟ فیصلہ ناقابل فہم؟'': اسرائیل

ایران کو یو این کی تخفیف اسلحہ کمیٹی کا رکن بنانے پر اسرائیلی سفیر کا احتجاجی مراسلہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران کو اقوام متحدہ میں تخفیف اسلحہ سے متعلق اعلی سطح کی کمیٹی کا رکن بنانے اور عالمی سلامتی کے امور میں کردار دیے جانے پر اسرائیل نے تشویش ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے'' یہ فیصلہ ناقابل فہم ہے۔'' اقوام متحدہ میں اسرائیل کے سفیر رون پروسور نے اس تشویش کا اظہار سیکرٹری جنرل بان کی مون کے نام لکھے جانے والے ایک خط میں کیا ہے۔

اسرائیلی سفیر کے احتجاج اور تشویش پر مبنی خط میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ '' ایک ملک، جس پر اقوام متحدہ نے اس کے مشکوک جوہری پروگرام کی وجہ سے پابندیاں لگا رکھی ہیں، اسی ملک کو اقوام متحدہ کی ایک اہم کمیٹی میں نمایاں پوزیشن دے دی گئی ہے۔ حد یہ ہے کہ وہ ملک دوسرے رکن ممالک کی نمائندگی کرتے ہوئے کمیٹی کی میٹنگ کے حوالے سے کمیٹی کی رپورٹ بھی تیار کرے گا۔''

اسرائیل کے سفیر نے اپنے غم و غصہ کا اظہار کرتے ہوئے خط میں لکھا ہے کہ ایران کو اس کمیٹی میں اس پوزیشن کے ساتھ لیے جانے کا مطلب یہ ہے کہ ایک ڈرگ لارڈ کو کسی فارماسیوٹیکل کمپنی کا انتظامی سر براہ بنا دیا جائے۔''

اسرائیلی سفیر کے مطابق ایران کو اس کمیٹی میں اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو کے جنرل اسمبلی سے اس خطاب جس میں یاہو نے ایرانی جوہری پروگرام کے خلاف اکیلے لڑنے کا کہا تھا کے فوری بعد لیے جانے سے اقوام متحدہ کا جواز ختم ہو گیا ہے۔''

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں