.

جعلی حج ویزوں پرجدہ پہنچنے والے 50 ایرانی عازمین وطن واپس

"ایرانیوں نے حج فریم ورک سے باہر ویزے حاصل کیے تھے"

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

جعلی حج ویزے حاصل کرنے کے بعد فریضہ حج کی ادائیگی کے لیے حجاز مقدس پہنچنے والے 50 ایرانی باشندوں کو وطن واپس بھجوا دیا گیا ہے۔ ایران کے سرکاری ٹیلی ویژن چینل نے جدہ بین الاقوامی ہوائی اڈے سے واپس آنے والے پچاس عازمین حج کے تہران پہنچنے کی تصدیق کی ہے اور کہا ہے کہ ان لوگوں کی واپسی جعلی حج ویزوں کے باعث ہوئی ہے۔

ایرانی وزارت خارجہ کے مندوب غلام عباس ارباب کے ایک مقرب ذریعے نے اطلاع دی ہے کہ جدہ میں قائم ایرانی قونصل خانے کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ پچاس ایرانی شہری دوحہ کی پروازوں کے ذریعے پہنچے تھے جہاں جدہ ہوائی اڈے پر ان کے ویزوں کی جانچ پڑتال کی گئی تو وہ جعلی نکلے۔ ذرائع کے مطابق سعودی حکام کا کہنا ہے کہ واپس بھیجے گئے ایرانیوں نے حج فریم ورک سے باہر رہتے ہوئے حج ویزے لے رکھے تھے جس کے باعث انہیں مشہد ہوائی اڈے پر جانے والی پرواز کے ذریعے واپس بھیج دیا گیا ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ جدہ میں ایرانی شہریوں کے ویزوں کی چیکنگ کی گئی تو ان کے ویزہ نمبر حج ویزوں کی سیریز میں شامل نہیں تھے، جس کے باعث انہیں وہیں سے واپس بھجوا دیا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق جدہ سے واپس آنے والے ایرانی شہریوں نے یہ ویزے 800 سے 2000 ڈالر کی رقم ادا کرکے حاصل کر رکھے تھے تاہم سعودی حکومت نے انہیں حج فریم ورک سے باہر قرار دیتے ہوئے مسترد کردیا۔

تہران وزارت خارجہ کے عہدیدار نے جعلی حج ویزے فراہم کرنے والی کمپنیوں اوراداروں کے خلاف قانونی کارروائی کا مطالبہ کیا اور کہا کہ حج کا جھانسہ دے کرسادہ لوح شہریوں کو لوٹنے والوں کا کڑا احتساب کیا جانا چاہیے۔