مقدس مقامات میں غیر قانونی داخلے کی 600 کوششیں ناکام

خفیہ کیمروں سے مانیٹرنگ نے قانون کی عمل داری آسان بنا دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مکہ مکرمہ اور مقدس مقامات میں حجاج کرام کی سیکیورٹی اور نگرانی کے لیے نصب خفیہ کیمروں اور الیکٹرانک مانیٹرنگ آلات کی مدد سے نظم وضبط قائم کرنے میں مدد مل رہی ہے۔ پچھلے چند ایام میں خفیہ کیمروں کی نشاندہی پر ٹریفک قوانین کی خلاف ورزی کرتے ہوئے مقدس مقامات میں بغیراجازت کے داخلے کی کوشش کرنے والی 600 گاڑیوں کو روکا گیا اور ان پرسوار افراد کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی عمل میں لائی گئی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سعودی سیکیورٹی حکام کا ماننا ہے کہ جب سے مقدس مقامات اور مکہ مکرمہ میں حجاج کے وفود کی آمد شروع ہوئی ہے خفیہ کیمروں کی مدد سے غیر قانونی داخلے کے چھ سو واقعات کی نشاندہی کے بعد انہیں بروقت روکا گیا ہے۔ سیکیورٹی حکام کا کہنا ہے کہ بغیر اجازت کے مقدس مقامات کی طرف آنے والے افراد کی زیادہ تعداد "الشمیسی" چیک پوائنٹ پر نصب کیمروں اور الیکٹرانک آلات کی مدد سے نشاندہی کے بعد روکی گئی۔

الشمیسی چیک پوسٹ پر گاڑیوں کی آمد و رفت پر نظر رکھنے والی سیکیورٹی ٹیم کے سربراہ لفٹیننٹ کرنل احمد الغامدی نے "العربیہ" کو بتایا کہ جدہ ہوائی اڈے اور شہر کی طرف سے آنے والے دیگر حجاج کرام کی سیکیورٹی چیکنگ کے لیے الشمیسی چیک پوسٹ پر الیکٹرانک مانٹیرنگ گیٹ نصب کیا گیا ہے جو چوبیس گھنٹے حجاج کی آمدو رفت کے لیے کھلا رہتا ہے۔

اس گیٹ میں آٹھ مقدس مقامات کے مطابق آٹھ ہی الگ الگ داخلی راستے بنائے گئے ہیں، جہاں سے داخل ہونے والوں کا ہر وقت رش لگا رہتا ہے۔ بغیر اجازت کے مقدس مقامات کی طرف جانے کی کوشش کرنے والے شخص کو موقع پر ہی جرمانہ کیا جاتا ہے یا ضرورت کےمطابق اس کے خلاف قانونی کارروائی عمل میں لائی جاتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں