.

اقوام متحدہ کی مس کاگ کیمیائی ہتھیار تلفی مشن کی سربراہ مقرر

تقرری کے لیے سیکٹری جنرل نے باضابطہ نوٹیفکیشن جاری کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل بان کی مون نے شام میں کیمیائی ہتھیاروں کی تلفی کے سلسلے میں ''سگریڈ کاگ '' کو اقوام متحدہ اور امتناع کیمیائی ہتھیار تنظیم کے مشترکہ مشن کی سر براہ مقرر کر دیا ہے۔

سیکرٹری جنرل کے اس فیصلے سے سلامتی کونسل کے موجودہ سربراہ اور آذربائیجان کے اقوام متحدہ کیلیے سفیر آگشین میہدیف کو بھی باضابطہ طور پر آگاہ کر دیا گیا ہے ۔ واضح رہے آج کل سلامتی کونسل کی صدارت روٹیشن کے اصول کی بنیاد پر آذربائیجان کے پاس ہے ۔

شام میں کیمیائی ہتھیاروں کی تلفی کے لیے ان دنوں ایک سو معائنہ کار مصروف کار ہیں، جبکہ حال ہی میں امن کے نوبل انعام کی مستحق قرار پانے والی تنظیم او پی سی ڈبلیو نے اس مشن کا آغاز ماہ اکتوبر سے کیا ہے۔

مس کاگ اقوام متحدہ کی اسٹنٹ سیکرٹری جنرل ہیں جو بنیادی طور پر اقوام متحدہ کے ترقیاتی پروگرام کو دیکھتی ہیں، البتہ 2007 سے مشرق وسطی اور شمالی افریقہ کیلیے یونیسیف کے معاملات دیکھنے کیلیے عمان میں موجود ہیں۔۔

مس کاگ دمشق پہنچ کرکیمیائی ہتھیاروں کی تلفی کے اس عالمی مشن کی سربراہی کریں گی جس کا ایک مرکز دمشق میں جبکہ اس کی معاونت کیلیے دوسرا مرکز قبرص میں بنایا گیا ہے۔

اقوام متحدہ کی اسٹنٹ سیکرٹری جنرل مس کاگ کی زیر قیادت کیمیائی ہتھیاروں کی کا مشن جون 2014 تک مکمل کیے جانے کا ہدف ہے۔ واضح رہے 52 سالہ مس کاگ نے 1994 میں اقوام متحدہ کو جوائن کیا تھا اور وہ انگریزی کے علاوہ جرمن، فرانسیسی اور عربی زبان بھی جانتی ہیں۔