.

آئی ایم ایف مصر کے ساتھ دوبارہ معاملات شروع کرنے پر تیار

امریکی ''شٹ ڈاون ''کا جلد خاتمہ ہونا چاہیے، مینجنگ ڈائریکٹر آئی ایم ایف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عالمی مالیاتی ادارہ آئی ایم ایف تین ماہ کے تعطل کے بعد مصر کو قومی تعمیر و ترقی کی جدوجہد میں مدد دینے کی لیے مصر کی عبوری حکومت سے بات چیت پر آمادہ ہو گیا ہے۔ آئی ایم ایف کی جانب سے قرضوں کی فراہمی میں رکاوٹ مصر کے پہلے منتخب صدر محمد مرسی کی فوج کے ہاتھوں بر طرفی کے بعد آئی تھی۔

آئی ایم ایف کی مینجنگ ڈائریکٹر کرسٹائن نے'' العربیہ '' سے بات کرتے ہوئے کہا '' آئی ایم ایف مصر کے ساتھ قرضوں کے سلسلے میں مذاکرات شروع کرنے کو تیار ہے۔''

آئی ایم ایف کی کی آیم ڈی کا مزید کہنا تھا '' عالمی ادارہ مصر سے محض بات چیت کیلیے ہی تیار نہیں ہے بلکہ اس سلسلے میں مصر کے ساتھ معاملات کو سنجیدگی سے آگے بڑھانا چاہتا ہے، تاکہ مصری عوام کی بھلائی ممکن ہو۔''

انہوں نے کہا '' میں سمجھتی ہوں کہ مصر کیساتھ آئی ایم ایف کے اقتصادی تعاون کا مرکزی نکتہ معاشی اصلاحات ہونا چاہیے جن کی بنیاد پر مصر دوبارہ اپنے قدموں پر کھڑا ہو سکتا ہے۔'' آئی ایم ایف کی ذمہ دار کا کہنا تھا '' ان مذاکرات کا مقصد مصر کی عالمی منڈیوں تک رسائی، اقتصادی خسارے میں کمی، اور عوامی مفاد کے منصوبوں پر اخرجات ہیں۔''

آئی ایم ایف کی ایم ڈی کا اس موقع پر امریکی شٹ ڈاون کے بارے میں کہنا تھا'' شٹ ڈاون کے بحران کا خاتمہ ایک ٹیڑھا معاملہ ہے ، اس لیے اسے جس قدر جلد ممکن ہو حل کیا جانا چاہیے۔'' ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا '' آئی ایم ایف امریکی شٹ ڈاون کے خاتمے کیلیے کوئی مشورہ نہیں دے گا کیونکہ آئی ایم ایف کسی سیاسی موقف کا اظہار نہیں کرتا ہے۔''