.

فلسطینی صدر کی پاپائے روم کو''مقدس سرزمین'' کے دورے کی دعوت

پوپ آیندہ مارچ میں دورہ کرسکتے ہیں،ویٹی کن کا تاریخوں کی تصدیق سے گریز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلسطینی صدر محمود عباس نے رومن کیتھولک کے روحانی پیشوا پوپ فرانسیس کو مقدس سرزمین کے دورے کی دعوت دی ہے۔

فلسطینی صدر نے ویٹی کن سٹی میں رومن کیتھولک کے خارجہ امور کے ذمے دار ڈومنیک ممبرٹ سے جمعرات کو ملاقات کی اور اس کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ''میں نے پوپ کو مقدس سرزمین (فلسطین) کے دورے کی دعوت دی ہے''۔

محمودعباس سے قبل اسرائیلی وزیراعظم شمعون پیریز نے بھی اسی سال کے آغاز میں پاپائے روم کو دورے کی دعوت دی تھی اور آیندہ بدھ کو اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو پوپ فرانسیس سے ملاقات کرنے والے ہیں۔

پاپائے روم پوپ فرانسیس قبل ازیں مقدس سرزمین کے دورے کا عندیہ دے چکے ہیں اوران کا کہنا ہے کہ وہ آرتھوڈکس عیسائیوں کے روحانی پیشوا قسطنطین کے اسقف اعظم برتھولومیواول کے ساتھ اس دورے پر آئیں گے۔

لیکن ویٹی کن نے ابھی تک اس دورے کی تاریخوں کی تصدیق نہیں کی ہے حالانکہ اسرائیلی ٹیلی ویژن چینل 2
نے ایک رپورٹ میں بتایا تھا کہ پوپ آیندہ سال مارچ میں یہ دورہ کریں گے۔

واضح رہے کہ محمود عباس حالیہ مہینوں کے دوران پاپائے روم سے ملاقات کرنے والے مشرق وسطیٰ کے چوتھے لیڈر ہیں۔ان سے پہلے اسرائیلی صدر شمعون پیریز ،لبنانی صدر مشعل سلیمان اور اردن کے شاہ عبداللہ دوم نے ویٹی کن میں پوپ فرانسیس سے ملاقات کرچکے ہیں۔