.

فرانسیسی شہریوں کی جاسوسی پر پیرس میں امریکی سفیر کی طلبی

امریکا کی نیشنل سکیورٹی ایجنسی نے 7کروڑ فرانسیسی فون کالزکا جائزہ لیا تھا:رپورٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فرانسیسی وزیرخارجہ نے اپنے ملک کے شہریوں کی جاسوسی پر پیرس میں متعین امریکی سفیر کو طلب کرنے کا اعلان کیا ہے۔

پیرس سے شائع ہونے والے کثیرالاشاعت فرانسیسی اخبار لی موندے نے ایک رپورٹ میں بتایا ہے کہ امریکا کے خفیہ ادارے نیشنل سکیورٹی ایجنسی (این ایس اے) نے فرانسیسی شہریوں کی کروڑوں فون کالز جاسوسی کے مقاصد کے لیے ٹیپ کی اور سنی تھیں۔

اخبار نے امریکی اہلکار ایڈورڈ سنوڈن کے حوالے سے لکھا ہے کہ امریکی سراغرساں ادارے نے تیس دن کے عرصے میں فرانسیسی شہریوں کی سات کروڑ سے زیادہ فون کالز کا ریکارڈ ملاحظہ کیا تھا۔

لی موندے کے مضمون نگار گلین گرین والڈ نے این ایس اے کے فرانسیسی شہریوں کی نگرانی کے اس پروگرام کا انکشاف کیا تھا۔انھوں نے اپنے مضمون میں لکھا ہے کہ جب متعدد نمبرز فون کالز کے لیے استعمال کیے جاتے تھے تو گفتگو از خود ہی ریکارڈ ہونا شروع ہوجاتی تھی۔

یورپی یونین کے وزرائے خارجہ کی بھی سوموار کی صبح پیرس میں ایک اجلاس کے سلسلہ میں آمد ہوئی ہے۔اس موقع پر فرانسیسی وزیرخارجہ لوراں فابیئس نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اس رپورٹ کی اشاعت کے فوری بعد انھوں نے امریکی سفیر کو طلب کر لیا ہے اور آج صبح ہی اس ضمن میں ملاقات ہونے والی تھی۔

انھوں نے کہا کہ ''وہ امریکی سفیر سے اس مکمل طور پر ناقابل قبول عمل کی وضاحت کا مطالبہ کریں گے''۔لی موندے کی رپورٹ میں مزید بتایا گیا ہے کہ امریکا کے نگرانی کے پروگرام کے تحت بعض بنیادی الفاظ پر مبنی ٹیکسٹ پیغامات تک بھی رسائی حاصل کی جاتی رہی ہے۔واضح رہے کہ قبل ازیں برطانیہ اور جرمنی میں بھی امریکا کے سراغرسانی کے مقاصد کے لیےاس طرح کے نگرانی کے پروگراموں کا انکشاف ہوچکا ہے۔